پاکستانفیچرڈ پوسٹ

نادرا کو یہ اختیار حاصل نہیں کہ وہ اپنے طور پر کسی کا شناختی کارڈ منسوخ کر کے کسی معزز شخص کو غیر پاکستان کر دے؟ تہلکہ خیز خبر سامنے آگئی

اسلام آباد ہائیکورٹ کا کہنا ہے کہ نادرا خود سے کسی بھی شہری کا شناختی کارڈ بلاک، معطل یا منسوخ نہیں کر سکتا

نادرا کو یہ اختیار حاصل نہیں کہ وہ اپنے طور پر کسی کا شناختی کارڈ منسوخ کر کے کسی معزز شخص کو غیر پاکستان کر دے؟ تہلکہ خیز خبر سامنے آگئی۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ نے حافظ حمد اللہ کے ساتھ 10مزید شہریوں کے شناختی کارڈ بحال کر دیئے۔ چیف جسسٹس اطہر من اللہ نے 29 صفحات پر مشتمل تفصیلی فیصلہ جاری کرتے ہوئے عبدالرحیم، نائیک محمد، محمد حنیف اور دیگر کے شناختی کارڈ بھی بحال کرنے کا حکم دیا۔ اسلام آباد ہائیکورٹ نے تفصیلی فیصلہ میں قرار دیا کہ نادرا کسی کو بھی شہریت سے محروم کرنے کا اختیار نہیں رکھتا، اس کا کام صرف رجسٹریشن کرنا اور ڈیٹا بیس برقرار رکھنا ہے، نادرا خود سے نہ شناختی کارڈ بلاک، نہ معطل اور نہ منسوخ کرسکتا ہے۔ فیصلے میں کہا گیا کہ شہریت کا معاملہ سٹیزن شپ ایکٹ کے تحت متعلقہ اتھارٹی ہی دیکھ سکتی ہے، شناختی کارڈ معطل یا بلاک کرنے کے لئے جوڈیشل آرڈر ضروری ہے، حافظ حمد اللہ پاکستان میں پیدا ہوئے، ان کا بیٹا پاک فوج میں خدمات انجام دے رہا ہے، کچھ ریکارڈ پر موجود نہیں آخر یہ نتیجہ نکالا کیسے گیا کہ حمد اللہ اور دیگر پاکستانی شہری نہیں ہیں، محض کسی انٹیلی جنس ایجنسی کی رپورٹ پر نادرا کسی کی شہریت ختم نہیں کر سکتا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.