پاکستان

رنگ روڈ سکینڈل کی انکوائری بھی ہو جائے گی اور اسے پبلک بھی کر دیا جائے گا مگر سزا کیسے ملے گی؟ تجزیہ کار ارشادبھٹی حکومت پر برس پڑے

رنگ روڈ نوا ہاؤسنگ سوسائٹی، وفاقی وزیر غلام سرور کے بیٹے کا نام آچکا، وہ انکار کر چکے، نواسٹی کو سول ایوی ایشن نے این او سی کیوں، کیسے دیا؟

رنگ روڈ سکینڈل کی انکوائری بھی ہو جائے گی اور اسے پبلک بھی کر دیا جائے گا مگر سزا کیسے ملے گی؟ تجزیہ کار ارشادبھٹی حکومت پر برس پڑے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی ارشاد بھٹی نے تجزیہ کرتے ہوئے کہا کہ رنگ روڈ نوا ہاؤسنگ سوسائٹی، وفاقی وزیر غلام سرور کے بیٹے کا نام آچکا، غلام سرور انکار کر چکے، نواسٹی کو سول ایوی ایشن نے این او سی کیوں، کیسے دیا؟،یہ معمہ بھی حل طلب، سول ایوی ایشن غلام سرور کے ماتحت، سنا جارہا نوا ہاؤسنگ سوسائٹی نے مبینہ طور پرجعلی پلاٹو ں کی 20سے 30ہزار جعلی فائلیں بیچیں، زلفی بخاری سے استعفیٰ لیا جاچکا، ان کا نہ صرف رنگ روڈ کے حوالے سے بلکہ اور معاملات میں بھی بہت کچھ سامنے آرہا، راولپنڈی ضلعی انتظامیہ کو عہدوں سے ہٹایا جاچکا، اب رنگ روڈ معاملہ نیب اور اینٹی کرپشن کے پاس، ابھی تحقیقات کا ابتدائی مرحلہ، ابھی بہت کچھ سامنے آنا باقی، اینٹی کرپشن کی ابتدائی تحقیقات کے مطابق 131ارب زمین کی خرید فروخت ہوئی، وزرا سمیت 50طاقتوروں نے فائدہ اٹھایا، 64ہزارکنال سے زائد زمین کاروباری افراد نے خریدی، 18ارکان اسمبلی کی سترہ ہزار ایک سو سترہ کنال زمین رنگ روڈ سے جڑی ہوئی، پیپلز پارٹی کے دوایم این ایز کی 24سو کنال، تحریک انصاف کے 2ایم این ایز، 4ایم پی ایز کی 18سو کنال، ن لیگ کے سینیٹرز اور 2ایم این ایز کی 6ہز ار کنال، اٹک لوپ کے اِردگرد 18ہاؤسنگ سوسائٹیوں نے 13ہزار کنال زمین خرید، بیچ کر دنوں میں 11ارب کا منافع کمایا، رنگ روڈ کی آڑمیں راولپنڈی کے گردونواح میں 10سوسائٹیوں اور بیسیوں افراد نے 24ہزار پانچ سوکنال زمین کی خریدوفروخت سے 50ارب کا کاروبار کیا، اسلام آباد کے گردونواح میں رنگ روڈ کا نام استعمال کرکے 8ہاؤسنگ سوسائٹیوں اور کاروباری افراد نے 10ہزار کنال زمین کی خریدوفروخت سے 35ارب کا کاروبارکیا، اینٹی کرپشن کی تحقیقات سے یہ بھی پتا چلا کہ 60فیصد ہاؤسنگ سوسائٹیاں غیر قانونی، 17ہاؤسنگ سوسائٹیاں ایک ارب 70کروڑ کی نادہندہ، ان سوسائٹیوں کیخلاف300سے زائد کیس، نیب اور مختلف عدالتوں میں چل رہے، دکھ کی بات، جہاں سیاستدان، بیوروکریٹس، مختلف محکموں کے ریٹائر افسر،بلڈرز، ہاؤسنگ سوسائٹیاں سب نے مل کر لوٹا، وہاں عوام لٹ گئی، سینکڑوں غریبوں کے پلاٹ ہوا میں، صرف کاغذوں میں، ڈبل دکھ کی بات، ایک با رپھر ثابت ہوا کہ ہم ایک کرپٹ قوم اور کیا کہوں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.