پاکستان

برطانیہ نوازشریف کو کیسے ڈی پورٹ کرے گا اور اس کے لئے اس کو کونسا قدم اٹھانا پڑے گا؟ سنسنی خیز حکومتی دعویٰ سامنے آگیا

برطانیہ کا قانون ہے سزا یافتہ شخص کو وزٹ ویزہ نہیں دیا جا سکتا ہے اور برطانیہ کو بتا دیا گیا ہے کہ نواز شریف سزا یافتہ ہیں

برطانیہ پاکستانی سابق وزیراعظم نوازشریف کو کیسے ڈی پورٹ کرے گا اور اس کے لئے اس کو کونسا قدم اٹھانا پڑے گا؟ سنسنی خیز حکومتی دعویٰ سامنے آگیا۔

تفصیلات کے مطابق پی ٹی آئی حکومت کے مشیر احتساب و داخلہ شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ برطانیہ نواز شریف کو ڈی پورٹ کر سکتا ہے‘ برطانیہ کا قانون ہے سزا یافتہ شخص کو وزٹ ویزہ نہیں دیا جا سکتا ہے اور برطانیہ کو بتا دیا گیا ہے کہ نواز شریف سزا یافتہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ کو بتایا ہے نواز شریف وہاں کوئی علاج نہیں کروا رہے اور ہماری اطلاعات کے مطابق نواز شریف نے وہاں ایک ٹیکا بھی نہیں لگوایا شہزاد اکبر نے کہا کہ برطانیہ سے کہا ہے معاملہ خود دیکھ کر قانون کے مطابق فیصلہ کریں اسی لیے برطانیہ ایگزیکٹو آرڈر سے نواز شریف کو ڈی پورٹ کر سکتا ہے کیونکہ برطانیہ نے ہمیں نواز شریف کی حوالگی کی درخواست دینے کا کہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ سے کہا ہے پہلے دیکھیں آپ کا قانون وزٹ پر قیام کی اجازت دیتا ہے یا نہیں؟ اور حوالگی کی درخواست طویل عمل ہے اسے بعد میں دیکھیں گے اس موقع پر وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا کہ نواز شریف آصف زرداری سے کیسز کے التوا کا طریقہ سیکھ رہے ہیں جبکہ آصف علی زرداری کی طرح مریم نواز بھی التوا کے راستے پر چل نکلی ہیں.

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.