پاکستان

جعلی پائلٹ لائنس کیس، ایف آئی اے کی تحقیقات میں ایسے حقائق منظر عام پر آگئے کہ دنیا ایک بار پھر پاکستان کی طرف شک کی نگاہ سے دیکھنے لگی

ایک پائلٹ اورسول ایوی ایشن اتھارٹی کے2 افسران کو گرفتارکرلیاگیا، مقدمے میں گرفتارملزمان کے علاوہ دیگر 29 افراد کو بھی نامزد کردیا گیا

جعلی پائلٹ لائنس کیس، ایف آئی اے کی تحقیقات میں ایسے حقائق منظر عام پر آگئے کہ دنیا ایک بار پھر پاکستان کی طرف شک کی نگاہ سے دیکھنے لگی۔

تفصیلات کے مطابق گرفتار ملزمان میں پائلٹ ملک عابد حسین، سینئر جوائنٹ لائسنسنگ برانچ ڈائریکٹر فیصل انصاری شامل ہیں، گرفتار تیسرا ملزم سی اے اے لائسنسنگ برانچ کا سینئرسپرنٹنڈنٹ عبدالرئیس ہے جب کہ ایف آئی آر میں نامزد کیے گئے دیگرملزمان میں اسکینڈل کا مرکزی کردار سیدعدیل آفتاب، ایڈمن برانچ کے 2 اسسٹں ٹ بھی شامل ہیں، قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی پر مبنی لائسنسز حاصل کرنے والے 25 پائلٹس کو بھی مقدمے میں نامزد کیا گیا ہے۔

بتایا گیا ہے کہ سپریم کورٹ کے احکامات پر قائم بورڈ آف انکوائری کی رپورٹ پر ایف آئی اے کی تحقیقات جاری ہیں، جہاں اسکینڈل کی تحقیقات میں پہلی بار ایک پائلٹ کو گرفتار کیا گیا ہے جب کہ مقدمے میں درج پائلٹس کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کردیے گئے۔ یاد رہے کہ گزشتہ برس پاکستان میں پائلٹس کے جعلی لائسنس کے حوالے سے بڑا انکشاف ہوا تھا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.