پاکستان

ہائی کورٹ حملہ کیس;بدمعاش وکلا اڈیالہ جیل میں

اسلام آباد ہائی کورٹ حملہ کیس میں ضمانت مسترد ہونے پر 2 خواتین وکلا کو گرفتار کرکے اڈیالہ جیل منتقل کردیا گيا۔

دیگر تین وکلا معراج ترین، شائستہ تبسم اور یاسمین سندھو کی ضمانت کی درخواستیں بھی مسترد  ہوگئیں تاہم عدالت میں پیش نہ ہونے کے باعث ان کی گرفتاری عمل میں نہ آسکی۔

اسلام آباد کی انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج راجا جواد عباس حسن نے اسلام آباد ہائی کورٹ حملہ کیس میں 5 وکلا کی ضمانت کی درخواستوں پر سماعت کے بعد درخواستیں مسترد کرنے کا فیصلہ سنایا۔

ضمانت مسترد ہونے پر 2 خواتین وکلا بشریٰ سلیم اور شہلا بی بی کو کمرہ عدالت کے باہر سے گرفتار کر لیا گیا جنہیں عدالت نے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوا دیا جبکہ تین وکلا معراج ترین، شائستہ تبسم اور یاسمین سندھو کی ضمانت کی درخواستیں بھی مستردکی گئیں تاہم تینوں وکلا عدالت پیش نہ ہونے کے باعث گرفتاری سے بچ گئیں۔

علاوہ ازیں اسلام آباد ہائی کورٹ نے چیف جسٹس بلاک پر حملے کے مقدمہ میں خاتون وکیل فرزانہ فیصل کے خلاف توہین عدالت کیس میں متفرق درخواست پر وفاق کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.