پاکستانفیچرڈ پوسٹ

پاکستان کا تجارتی خسارہ، حکومت اور سرمایہ کاروں کے سامنے ایسے اعداد و شمار آگئے کہ سب سر پکڑ کر بیٹھ جائیں گے، عوام کے لئے بھی بُری خبر

کم برآمدات اور زائد درآمدات کی وجہ سے ایک سال قبل کے مقابلے میں پاکستان کا 'مرچنڈائز' تجارتی خسارہ مئی میں 134 فیصد بڑھ گیا

پاکستان کا تجارتی خسارہ، حکومت اور سرمایہ کاروں کے سامنے ایسے اعداد و شمار آگئے کہ سب سر پکڑ کر بیٹھ جائیں گے، عوام کے لئے بھی بُری خبر آگئی۔

رپورٹ کے مطابق مئی 2021 میں ماہانہ خسارہ 3 ارب 43 کروڑ 20 لاکھ ڈالر تک پہنچ گیا جو ایک سال قبل ایک ارب 46 کروڑ 70 لاکھ ڈالر تھا اور خدشات بڑھ رہے ہیں کہ حکومت کو بیرونی اکانٹ کنٹرول کرنے میں مشکلات کا سامنا ہوگا۔ روپے کے لحاظ سے تجارتی خسارے میں سالانہ بنیادوں پر 125.2 فیصد اضافہ ہوا۔

گزشتہ برس دسمبر کے مہینے سے تجارتی خسارے میں اضافہ جاری ہے اور اس کی بڑی وجہ ملک میں درآمدات میں بڑا اضافہ جبکہ اس کے مقابلے میں نسبتا سست برآمداتی عمل ہے۔ مالی سال 21-2020 کے 10 ماہ یعنی جولائی تا مئی 2021 تک تجارتی خسارہ 29.5 فیصد بڑھ کر 27 ارب 27 کروڑ 50 لاکھ ڈالر تک جاپہنچا جبکہ گزشتہ برس یہ خسارہ 21 ارب 6 کروڑ 50 لاکھ ڈالر تھا۔ مالی سال 2020 میں ملک کا تجارتی خسارہ 31 ارب 82 کروڑ ڈالر سے کم ہو کر 23 ارب 9 کروڑ 90 لاکھ ڈالر رہ گیا تھا، یہ سطح رواں مالی سال کے 10 ماہ کے عرصے میں پہلے ہی عبور ہوچکی ہے جو بڑھتی ہوئی درآمدات کے باعث بیرونی جانب سنگین دبا کی نشاندہی کرتی ہے۔ ملکی درآمدات کا بل مئی 2021 میں 77.8 فیصد بڑھ کر 5 ارب 9 کروڑ ڈالر تک جاپہنچا جو گزشتہ برس کے اسی عرصے میں 2 ارب 86 کروڑ 30 لاکھ ڈالر تھا۔ ماہانہ بنیادوں پر درآمداتی بل میں 3.23 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.