پاکستان

لاہور میں امیر شخص نے کروڑوں روپے کی گاڑی کیوں جلائی؟ہوشربا انکشافات

لاہور میں گزشتہ روز کینال روڈ پر ہونے والے گاڑی کے حادثے میں چونکا دینے والے انکشافات سامنے آئے ہیں۔

ذرائع کے مطابق نامعلوم شخص نے مال روڈ پر واقع ہوٹل کی انتظامیہ کو گاڑی کے مالک کو کمرہ دینے کے لیے فون کیا، ہوٹل انتظامیہ نے معاملہ مشکوک جان کر پولیس کو واقعے کی اطلاع دی۔ محافظ فورس کے اہلکارعاشق اور منور ہوٹل پہنچے،جنہوں نے ملزم حمزہ جاوید کو تھانے چلنے کو کہا، منور نامی اہلکارلگژری گاڑی میں حمزہ کے ساتھ سوار ہوگیا جبکہ دوسرا اہلکار عاشق موٹر سائیکل پرگاڑی کا پیچھا کرنے لگا۔ حمزہ جاوید نے گاڑی میں موجود پولیس اہلکار کو دولاکھ روپے رشوت کا لالچ دیا، پولیس اہلکارحمزہ جاوید کو ایک کلو میٹر سے کم دوری پر واقع تھانے لے جانے کی بجائے نہر کی جانب لے گئے، نہر کنارے پہنچ کر پولیس اہلکار منور اورگاڑی مالک حمزہ جاوید کے درمیان تلخ کلامی ہوگئی جس پر معاملہ خراب ہوگیا۔

مسلم ٹاؤن پہنچ کرحمزہ جاوید نے طیش میں آکر پہلے گاڑی دیوار سے ٹکرائی پھر پولیس اہلکار منور کو دھکا دے کر گاڑی کے نیچے دے دیا اور گاڑی کےنیچے پھنسی موٹر سائیکل سمیت گاڑی بھگادی، موٹر سائیکل کی رگڑ سے گاڑی کو آگ لگ گئی اور وہ جل کر تباہ ہو گئی۔

پولیس نے ہیڈ کانسٹیبل منور خان کی مدعیت میں گاڑی مالک حمزہ جاوید کے خلاف تھانہ سول لائنز میں مقدمہ درج کر لیا، مقدمےمیں اقدام ِقتل اور اغوا سمیت کئی دفعات لگائی گئی ہیں۔

دوسری جانب  پولیس نے ملزم حمزہ جاوید کا 3 روزہ جسمانی ریمانڈ حاصل کر لیا، ملزم ٹیکسٹائل مل کا مالک ہے جس نے پولیس کو بتایا کہ گاڑی مال روڈ کے قریب واقع شوروم میں عمر شیخ نامی شخص سے خریدی تھی،جبکہ گاڑی میں ڈھائی کروڑ روپے کی رقم بھی تھی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.