پاکستان

آپ نے احتساب کرنا ہے تو ضرور کریں لیکن ایک بار صرف ایک نظر میڈیا خواتین پر بھی ڈال لیں، صحافی مظہر عباس نے حکومت کو آئینہ دکھا دیا

میڈیا کارکنوں کے لئے کچھ کرنا چاہتے ہیں تو صرف ملک میں پہلے سے قائم لیبر قوانین کے تحت 90روز میں ریگولر کرنے کے قانون کو نافذ کریں

آپ نے احتساب کرنا ہے تو ضرور کریں لیکن ایک بار صرف ایک نظر میڈیا خواتین پر بھی ڈال لیں، صحافی مظہر عباس نے حکومت کو آئینہ دکھا دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی مظہر عباس کا کہنا تھا کہ موجودہ حکمرانوں کو یہ تاریخ یاد دلانے کا مقصد صرف ایک ہے۔ آپ احتساب کرنا چاہتے ہیں ضرور کریں۔ ایک نظر پرنٹ، الیکٹرونک اور سوشل میڈیا کے قوانین خود دیکھ لیں ان پر عمل درآمد کریں۔ میڈیا کارکنوں کے لئے کچھ کرنا چاہتے ہیں تو صرف ملک میں پہلے سے قائم لیبر قوانین کے تحت 90روز میں ریگولر کرنے کے قانون کو نافذ کریں۔ عمل درآمد ٹریبونل نیوز پیپرز ایکٹ کے تحت ہر صوبہ میں بنائیں۔ برسوں سے کہہ رہے ہیں ہتک عزت کے قانون کو آسان اور سخت کریں۔ آج بھی 2002 کے قانون کے تحت 90روز میں ڈسرکٹ کورٹ اور 30روز میں ہائی کورٹ کو اپیل پر فیصلہ کرنا ہوتا ہے۔ اور بولیں تو میڈیا کے کارکنوں کو نیوز پیپر ایکٹ میں لے آئیں۔ یہ ڈرافٹ تو فواد چوہدری صاحب کے پاس موجود ہے میں نے ذاتی طور پر انہیں اور فیصل جاوید کو بھیجا تھا۔

مگر اصل مسئلہ ہی کچھ اہے اور وہ ہے ان آوازوں کو بند کرنا، ختم کرنا جو غلط کو غلط کہتی ہیں۔ سوشل میڈیا کے قانون PECA-2016 کے تحت اب تک یہی کام ہوا ہے۔ تو اب کوئی اور میڈیا اتھارٹی قبول نہیں کیونکہ پس پردہ مقاصد کچھ اور نظر آتے ہیں۔ آج آپ ہیں کل کوئی اور ہوگا۔ مسلم لیگ (ن)اور پی پی پی کی حکومتیں ایسی ہی غلطیاں کرتی رہی ہیں۔دیکھیں حضور، ہم حکمرانوں سے دور اور جیلوں سے قریب رہنے والے لوگ ہیں۔ ہمارے درمیان یقینا درباری صحافیوں کی بھی کمی نہیں۔ ویسے بھی سر پھرے لوگ کم ہی ہوتے ہیں مگر معاشرہ انہی کی وجہ سے زندہ رہتا ہے۔ 1971 میں سب اچھا لکھنے والے صحافیبھی تھے اور یہ بتانے والے بھی کہ گماں تم کو کہ رستہ کٹ رہا ہے۔ یقین مجھ کو کہ منزل کھو رہے ہو۔ہم نہ مادر پدر آزادی صحافت چاہتے ہیں نہ مادر پدر حکمرانی۔ ہم تو قانون کی حکمرانی کے قائل ہیں۔ آپ اپنی طاقت آزما لیں، ہم اپنا حوصلہ۔ 1978 کی تحریک کے دوران ایک ساتھی نے جیل سے خط میں کہا، آپ لوگ پریشان نہ ہوں ہمارے حوصلے بلند ہیں۔ یہ سزائیں، چھاپے، گرفتاریاں، کوڑے ہمارے عزم کو پست نہیں کرسکتے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.