پاکستان

جہانگیر ترین کی شوگرملز کے آڈٹ کیخلاف دائر درخواست مسترد

آڈٹ کمشنر نے جے ڈی ڈبلیو شوگر ملز کا 2015 کا آڈٹ کرنے کا نوٹس بھجوایا، نوٹس کے ذریعے انکم ٹیکس سے متعلق ریکارڈ مانگا گیا ہے

تحریک انصاف کے ناراض رہنماء جہانگیر ترین نے لاہور ہائی کورٹ میں شوگرملز کے آڈٹ کے خلاف درخواست دائر کی جیسے عدالت نے مسترد کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کے ناراض رہنماء جہانگیر ترین نے لاہور ہائی کورٹ میں شوگرملز کے آڈٹ کے خلاف درخواست دائر کی، درخواست پر سماعت جسٹس محمد راحیل کامران شیخ نے کی۔ درخواست میں ایف بی آر سمیت دیگر کو فریق بناتے ہوئے مؤقف پیش کیا گیا کہ جے ڈی ڈبلیو شوگر ملز کا شمار پاکستان کے بڑے ٹیکس دہندگان میں ہوتا ہے، آڈٹ کمشنر نے 21 مئی کو جے ڈی ڈبلیو شوگر ملز کا 2015 کا آڈٹ کرنے کا نوٹس بھجوایا ہے، اور نوٹس کے ذریعے انکم ٹیکس سے متعلق مختلف دستاویزات اور ریکارڈ مانگا گیا ہے۔

درخواست گزار کا کہنا ہے کہ ایف بی آر 5 برس کا عرصہ گزرنے کے بعد کسی بھی کاروباری ادارے کا آڈٹ کرنے کا مجاز نہیں، قانونی طور پر ایف بی آر 2015 کا ٹیکس آڈٹ کرنے کیلئے 30 ستمبر 2020 تک مجاز تھا، ٹیکس آڈٹ کرنے کا قانونی عرصہ گزر چکا ہے، اب بھیجا گیا آڈٹ نوٹس غیر قانونی اور بد نیتی پر مبنی ہے۔ درخواست میں استدعا کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ایف بی آر کا جے ڈی ڈبلیو شوگر ملز کے آڈٹ کا نوٹس ٹیکس آرڈیننس کی دفعہ 122 اور 174 سے متصادم ہے، ایف بی آر کا 2015 کا آڈٹ کرنے کا نوٹس زائد المیعاد قرار دے کر کالعدم کیا جائے، درخواست کے حتمی فیصلے تک ایف بی آر کو جے ڈی ڈبلیو شوگر ملز کے خلاف تادیبی کارروائی سے روکا جائے۔ عدالت نے درخواست گزار اور ایف بی آر کے وکلا کا موقف سن کر جے ڈی ڈبلیو شوگر مل کو بھجواے گئے نوٹسز کالعدم قرار دینے کی درخواست خارج کردی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.