پاکستانفیچرڈ پوسٹ

حالیہ ہفتے کے ملک میں کتنی اشیائے ضروریہ مہنگی، کتنی سستی اور کتنی کی قیمتیں مستحکم رہیں؟ ادارہ شماریات نے حیران کن اعدادو شمار جاری کر دیئے

حالیہ ہفتے کے دوران ملک میں 23اشیائے ضروریہ مہنگی،9سستی ہوئیں جبکہ19 کی قیمتیں مستحکم رہی ہیں

حالیہ ہفتے کے ملک میں کتنی اشیائے ضروریہ مہنگی، کتنی سستی اور کتنی کی قیمتیں مستحکم رہیں؟ ادارہ شماریات نے حیران کن اعدادو شمار جاری کر دیئے

تفصیلات کے مطابق وفاقی ادارہ شماریات نے ملک میں بھرتی ہوئی مہنگائی کے اعدادو شمار جاری کرتے ہوئے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ مالی سال 2021-22ء کے وفاقی بجٹ کے اثرات مہنگائی میں مسلسل اضافہ کی صورت میں ظاہر ہورہے ہیں بجٹ نافذ ہونے والے دن یکم جولائی کو ختم ہونے والے ہفتے کے دوران بھی مہنگائی کی شرح میں 0.53 فیصد اضافہ ہوا تھا جبکہ گذشتہ ایک ہفتے کے دوران چینی، آلو،ٹماٹر، انڈے، پیاز، لہسن، مٹن، بیف، ویجی ٹیبل گھی، ایل پی جی، صابن، دال چنا اور، تازہ کھلا دودھ سمیت مجموعی طور پر23 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ہوا اوردال مونگ، دال ماش، چکن، آٹا اوردال مسورسمیت 9 اشیا سستی ہوئی ہیں، 23 اشیائے ضروریہ کی قیمتیں مستحکم رہی ہیں۔

وفاقی ادارہ برائے شماریات کی جانب سے جاری کردہ اعدادوشمارمیں بتایا گیا ہے کہ 9 جولائی 21 20 کو ختم ہونیوالے ہفتے کے دوران حساس قیمتوں کے اعشاریہ (ایس پی آئی)کے لحاظ سے گذشتہ سال کے اسی عرصہ کے مقابلہ میں ملک میں مہنگائی کی شرح 12.28 فیصد رہی ہے تاہم اس سے پچھلے ہفتے کے مقابلہ میں گذشتہ ہفتے کے دوران مہنگائی کی شرح 0.07 فیصد اضافہ ہوا۔مہنگائی کے حوالے سے ادارہ شماریات نے ہفتہ واررپورٹ جاری کردی گئی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ ہفتہ وا بنیادوں پر گذشتہ ہفتے کے دوران ٹماٹر11.51 فیصد، آلو2.04 فیصد، پیاز4.85 فیصد، لہسن 8.31 فیصد اورچینی 2.60 فیصد، انڈے 1.67 فیصد مہنگا ہوا جبکہ چکن 12.97 فیصد، دال مسور0.34 فیصد، دال مونگ 1.81 فیصد، دال ماش 0.51 فیصد اور آٹا 0.22 فیصد سستی ہوئی۔

اعداد وشمارمیں مزید بتایا گیا ہے کہ گذشتہ ہفتے کے دوران جن 23 اشیا ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ان میں چینی، آلو،ٹماٹر، انڈے، پیاز، لہسن، مٹن، بیف، ویجی ٹیبل گھی، ایل پی جی، صابن، دال چنا اورتازہ کھلا دودھ سمیت دیگر اشیائے ضروریہ شامل ہیں۔ اعداد وشمار میں بتایا گیا ہے کہ گذشتہ ہفتے کے دوران حساس قیمتوں کے اعشاریہ کے لحاظ سے سالانہ بنیادوں پر17 ہزار732 روپے ماہانہ تک آمدنی رکھنے والے طبقے کیلئے مہنگائی کی شرح میں 15.72 فیصد، 17 ہزار 733 روپے سے 22 ہزار 888 روپے ماہانہ تک آمدنی رکھنے والے طبقے کیلئے مہنگائی کی شرح میں 12.35 فیصد، 22 ہزار 889 روپے سے 29 ہزار 517 روپے ماہانہ تک آمدنی رکھنے والے طبقے کیلئے مہنگائی کی شرح میں 11.69 فیصد، 29 ہزار 518 روپے سے 44ہزار 175 روپے ماہانہ تک آمدنی رکھنے والے طبقے کیلئے مہنگائی کی شرح 11.60 فیصد رہی ہوا جبکہ 44 ہزار 176 روپے ماہانہ سے زائد آمدنی رکھنے والے طبقے کیلئے مہنگائی کی شرح 11.53 فیصدرہی ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.