پاکستان

وفاقی کابینہ میں اختلافات کی بازگشت، محاذ آرائی کی اطلاع وزیراعظم کے علاوہ کس کو دی گئی؟ نیا پینڈورہ باکس کھل گیا

وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر اور وزیراعظم کے معاون خصوصی تابش گوہر نے اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان سے شکایت کی ہے

وفاقی کابینہ میں اختلافات کی بازگشت، محاذ آرائی کی اطلاع وزیراعظم کے علاوہ کس کو دی گئی؟ نیا پینڈورہ باکس کھل گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کو جو شکایات پہنچائیں گئیں اس حوالے سے اہم حقائق منظر عام پر آئے ہیں جن کے مطابق وزارت توانائی اور پیٹرولیم اسدعمر اور علی زیدی کی مداخلت سے پریشان ہیں۔ اسد عمر کابینہ کی کمیٹی برائے توانائی کی سربراہی کرتے ہیں اور علی زیدی اس کے ممبر ہیں۔ وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر اور وزیراعظم کے معاون خصوصی تابش گوہر نے اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان سے شکایت کی ہے۔ ذرائع کے مطابق وزارت توانائی اور پٹرولیم کسی صورت اس مداخلت پر خوش نہیں ہے۔ اور ایسے میں اس کا نقصان ملک کو ہو سکتا ہے کیونکہ ماضی میں بھی گذشتہ تین سالوں میں وزارت توانائی اور پٹرولیم کے دیر سے اور غلط فیصلوں کی وجہ سے ملک کو 122 ارب روپے کا نقصان ہو چکا ہے۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے پہلے ندیم بابر کو ہٹایا، پھر عمر ایوب سے وزارت لی جس کے بعد حماد اظہر کو وزیر بنایا اور تابش گوہر کو معاون خصوصی بنایا تاہم اب ان وزارتوں میں مداخلت کی شکایات موصول ہو رہی ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ حماد اظہر اور تابش گوہر موجودہ ٹرمینلز کی پوری کیپسٹی استعمال کرنے کیحامی ہیں، ان پر کابینہ میں دباؤ ڈالا گیا کہ پرانے ایل این جی ٹرمینلز سے نہیں نئے ٹرمینلز کے ساتھ سوئی ساتھ کی گیس پائپ لائن کا معاہدہ کرلیا جائے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.