پاکستان

پاکستان اور روس کے درمیان گیس پائپ لائن کا بڑا منصوبہ طے پا گیا

پاکستان اور روس کے درمیان پاک سٹریم گیس پائپ لائن کی تعمیر کے لئے ’ہیڈ آف ٹرمز ‘معاہدہ طے پا گیا جس کے تحت کراچی کے علاقے پورٹ قاسم سے لاہور تک تقریباً 1100 کلومیٹر طویل گیس پائپ لائن ڈالی جائے گی جس پر 2.5 سے 3 ارب ڈالر لاگت آئے گی اور یہ 2023میں مکمل ہو گا۔

معاہدے پر سیکریٹری پٹرولیم ڈاکٹرارشد محمود اورروس کی وزات توانائی کے ڈپٹی ڈائریکٹر الیگزینڈر ٹولپاروف نے دستخط کیے۔لنکن لا چیمبر کے بیرسٹر اصغر خان اور آرڈگنم کے ظہیر ریاض نے بالترتیب روسی اور پاکستانی ٹیم کو قانونی معاونت فراہم کی۔دونوں فریقین نے پاک اسٹریم گیس پائپ لائن پروجیکٹ، جسے عام طور پر نارتھ ساؤتھ گیس پروجیکٹ کے نام سے جانا جاتا ہے، کے نفاذ کے لیے روس پاکستان مشترکہ تکنیکی کمیٹی کے تیسرے اجلاس کے چند منٹ پر بھی دستخط کیے۔

پائپ لائن کا سائز 56 انچ رکھا گیا ہے تاکہ ملک میں اگلے 30 سے 40 سال تک کی توانائی کی ضروریات کو پورا کیا جاسکے جس سے 700 سے 800 ملین مکعب فٹ فی یوم (ایم ایم ایف سی ڈی) گیس کی ترسیل کو یقینی بنایا جاسکے گا جو کمپریس ہو کر 2 ہزار ایم ایم سی ایف ڈی تک جاسکتی ہے۔

اس انتظام سے دونوں سوئی گیس کمپنیوں کو 56 انچ پائپ لائن چلانے اور اسی طرح کے بین الاقوامی منصوبوں کے لئے مسابقت کے ل their اپنی صلاحیتوں کو بہتر بنانے میں مدد ملے گی۔ تعمیر کے بعد کے کام اور اس پروجیکٹ کی دیکھ بھال سوئی کمپنیوں کی ذمہ داری ہوگی جو تعمیراتی مدت کے دوران بیرون ملک تربیت حاصل کریں گی۔

 

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.