پاکستان

قومی ایوارڈ یافتہ و سینئر صحافی رحیم اللہ یوسفزئی اپنے خالق حقیقی سے جا ملے

رحیم اللہ یوسفزئی 10 ستمبر 1954 کو پیدا ہوئے، انہیں القاعدہ کے سربراہ اسامہ بن لادن کے انٹرویو کی وجہ سے کافی شہرت ملی

قومی ایوارڈ یافتہ سینئر صحافی و ماہر افغان امور رحیم اللہ یوسفزئی اپنے خالق حقیقی سے جا ملے ہیں، ان کی نماز جنازہ کل دن 11 بجے مردان میں ادا کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق رحیم اللہ یوسفزئی کے اہلخانہ کے مطابق مرحوم طویل عرصے سے علیل تھے، ان کی نمازجنازہ کل دن 11 بجے مردان کاٹلنگ انذرگئی نزد سوات ایکسپریس وے کاٹلنگ انٹرچینج کے قریب خان ضمیر بانڈہ میں ادا کی جائے گی۔ رحیم اللہ یوسفزئی 10 ستمبر 1954 کو پیدا ہوئے، انہیں القاعدہ کے سربراہ اسامہ بن لادن کے انٹرویو کی وجہ سے کافی شہرت ملی۔ رحیم اللہ یوسفزئی ان چند صحافیوں میں سے ہیں جنہوں نے طالبان کے کارروائیوں کو رپورٹ کیا اور 1995 میں خود قندھار گئے۔ وہ روزنامہ جنگ کے لیے بطور کالم نگار کام کرتے رہے، اس سے پہلے ٹائم میگزین کے لیے بھی کام کیا جب کہ وہ بی بی سی اردو اور بی بی سی پشتو کے نمائندے بھی رہے۔ رحیم اللہ یوسفزئی افغانستان اور شمال مغربی پاکستان کے امور کے ماہر سمجھے جاتے تھے۔ مرحوم کی صحافتی خدمات کے اعتراف میں حکومت پاکستان نے انہیں 2004 میں تمغہ امتیاز اور 2009 میں ستارہ امتیاز سے نوازا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.