پاکستانفیچرڈ پوسٹ

وفاقی دارالحکومت میں باپ کے ہاتھوں بیٹی کا قتل، سراغ کیسے لگایا گیا، اصل میں قاتل کون تھا؟ رونگٹے کھڑے کر دینے والا سچ بے نقاب ہونے کے بعد سنسنی پھیل گئی

پولیس کو قاتل تک پہنچنے میں اس بائیک رائیڈر کے بیان سے بھی مدد ملی جس کے بائیک پر والد نے اپنی بیٹی کے ہمراہ سفر کیا تھا

وفاقی دارالحکومت میں باپ کے ہاتھوں بیٹی کا قتل، سراغ کیسے لگایا گیا، اصل میں قاتل کون تھا؟ رونگٹے کھڑے کر دینے والا سچ بے نقاب ہونے کے بعد سنسنی پھیل گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق پولیس افسر فیاض شنواری کا کہنا ہے کہ ہم نے بچی کے والد کے بھائیوں کو بلایا جنھوں نے بتایا کہ ان کے بھائی نے ان سے فون پر جھوٹ بولا تھا کہ بچی اس کے پاس سو رہی ہے۔ پولیس کو یہ بھی معلوم ہوا کہ بچی کے والد نے اس سے پہلے ایک بار اپنے بھائی سے فون پر بات کرتے ہوئے اپنی بیٹی کے کردار کے حوالے سے شکایت بھی کی تھی۔ پولیس کو قاتل تک پہنچنے میں اس بائیک رائیڈر کے بیان سے بھی مدد ملی جس کے بائیک پر والد نے اپنی بیٹی کے ہمراہ سفر کیا تھا۔ ڈی ایس پی فیاض شنواری نے اس حوالے سے تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ ملزم اپنی بیٹی کو قتل کرنے کے بعد آٹھ نومبر کو جی الیون میں ایک نجی دفتر گیا اور انھیں آگاہ کیا کہ وہ اپنی بیٹی کو اپنی والدہ اور چچا کے پاس چھوڑ آیا ہے اور یہ کہ اب اس کام

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.