پاکستانفیچرڈ پوسٹ

سٹیٹ بینک آف پاکستان ترمیمی بلز، آئی ایم ایف نے حکومت پاکستان کی پیش کردہ تجاویز پر کس قسم کا ردعمل ظاہر کیا؟ تشویشناک خبر منظر عام پر آگئی

عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف)نے حکومت پاکستان کی اسٹیٹ بینک سے قرض لینے کا راستہ کھلا رکھنے کی تجویز مسترد کردی ہے

سٹیٹ بینک آف پاکستان ترمیمی بلز، آئی ایم ایف نے حکومت پاکستان کی پیش کردہ تجاویز پر کس قسم کا ردعمل ظاہر کیا؟ تشویشناک خبر منظر عام پر آگئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق مرکزی بینک کا 100فیصد منافع بھی اس وقت تک وفاقی حکومت کو منتقل نہیں ہوسکے گا جب تک کہ بینک اپنے مالیاتی واجبات کے لیے کوئی کور حاصل نہیں کرلیتا جبکہ اسٹیٹ بینک کے نفع کا 20 فیصد بینک کے پاس ہی رہے گا جب تک کہ وہ مطلوبہ کور حاصل نہیں کرلیتا۔ میڈیا ذرائع نے بتایا کہ آئی ایم ایف نے اسٹیٹ بینک آف پاکستان ایکٹ 1956 میں ترامیم کی حکومت پاکستان کی تمام اہم تجاویز مسترد کردی ہیں اور صرف مرکزی بینک کے بورڈ ممبرز کی تقرری اور سیکریٹری خزانہ کو بورڈ میں رکھنے کا وفاقی حکومت کا اختیار تسلیم کیا لیکن سیکریٹری کو ووٹ کا اختیار نہیں ہوگا۔

ذرائع کے مطابق آئی ایم ایف نے یہ تجویز بھی مسترد کر دی کہ وفاقی حکومت مرکزی بینک کو افراطِ زر کا ہدف دے گی۔ آئی ایم ایف نے البتہ مس کنڈکٹ پر گورنر اسٹیٹ بینک کو ہٹانے کا حکومتی اختیار تسلیم کیا۔ اس حوالے سے مشیرخزانہ شوکت ترین نے کہا کہ حکومت اس بات کو یقینی بنائے گی کہ اسٹیٹ بینک کی خود مختاری سے م

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.