پاکستانفیچرڈ پوسٹ

عمران خان نےخواجہ آصف کے خلاف گواہی کیوں دی؟

وزیراعظم عمران خان نے مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف کے خلاف گواہی کیوں دی؟ ہوشربا تفصیلات سامنے آنے کے بعد قومی سیاست میں تہلکہ مچ گیا

وزیراعظم عمران خان نے مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف کے خلاف گواہی کیوں دی؟ ہوشربا تفصیلات سامنے آنے کے بعد قومی سیاست میں تہلکہ مچ گیا، وزیراعظم عمران خان نے اپنے دفتر سے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کے سامنے ویڈیو لنک کے ذریعے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما خواجہ آصف کے خلاف 9 سال قبل دائر کیے گئے ہتک عزت کے مقدمے کی گواہی دی۔

ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج محمد عدنان کی زیر صدارت ڈیجیٹل طور پر منسلک عدالت کے سامنے اپنا بیان ریکارڈ کرواتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے رہنما کی جانب سے شوکت خانم میموریل ٹرسٹ کے فنڈز کے ذریعے خورد برد اور منی لانڈرنگ کے بارے میں لگائے گئے الزامات بے بنیاد ہیں جن سے انہیں کم از کم 10 ارب روپے کا نقصان پہنچا۔

خواجہ آصف نے یہ الزامات پنجاب ہاؤس میں ایک پریس کانفرنس کرتے ہوئے لگائے تھے جس کے بعد اسی روز ایک ٹی وی پروگرام میں انہیں دہرایا تھا۔ اپنے مقدمے میں عمران خان نے یکم اگست 2012 کی پریس کانفرنس کا حوالہ دیا جس میں مسلم لیگ (ن) کے رہنما نے الزام لگایا تھا کہ پی ٹی آئی کے سربراہ شوکت خانم ٹرسٹ کو زکوٰۃ، فطرانہ یا عطیات کی شکل کی میں دی گئی بڑی رقم ‘رئیل اسٹیٹ جوئے’ میں ہار گئے ہیں۔

مذکورہ الزامات کو ’جھوٹے اور ہتک آمیز‘ قرار دیتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ شوکت خانم ہسپتال کی سرمایہ کاری کی اسکیموں پر فیصلے ان کی مداخلت کے بغیر ایک ماہر کمیٹی نے کیے تھے۔ پریس کانفرنس کے دوران مسلم لیگ (ن) کے رہنما نے کہا تھا کہ شوکت خانم ٹرسٹ کے 45 لاکھ ڈالر کے فنڈز سے بیرون ملک سرمایہ کاری کی گئی۔

خواجہ آصف نے حیرت کا اظہارکرتے ہوئے کہا تھا کہ ’اگر سرمایہ کاری محفوظ تھی، تو عمران خان نے اپنے پیسوں کو اس منصوبےمیں کیوں نہیں لگایا‘ ساتھ ہی ان الزامات پر جواب دینے کا مطالبہ بھی کیا تھا۔ اپنی درخواست میں عمران خان نے مؤقف اختیار کیا تھا کہ مسلم لیگ (ن) کے رہنما نے ’جان بوجھ کر اور بدنیتی سے‘ جھوٹے بیانات دیے جس کا مقصد پاکستان کے اندر اور باہر ان کی ساکھ کو نقصان پہنچانا تھا۔

درخواست میں کہا گیا تھا کہ خواجہ آصف نے پریس کانفرنس کے دوران درخواست گزار کا موازنہ ’ڈبل شاہ‘ سے کیا، جو کہ ایک بدنام زمانہ دھوکہ باز ہے جس نے جھوٹ کی بنیاد پر لوگوں کا پیسہ نکلوا کر انہیں ان کی محنت سے کی گئی بچت سے محروم کردیا تھا۔

اپنے دفتر سے ویڈیو لنک کے ذریعے عدالت کے سامنے گواہی دیتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ وہ 1991 سے 2009 تک شوکت خانم ٹرسٹ کے سب سے بڑے انفرادی عطیہ دہندہ تھے اور جس سرمایہ کاری کے خلاف الزامات لگائے گئے تھے وہ بغیر کسی نقصان کے ٹرسٹ نے پوری واپس حاصل کرلی تھی۔ اس دوران وزیراعظم کے وکیل سینیٹر ولید اقبال کمرہ عدالت میں موجود تھے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.