پاکستان

کیا چاہتے ہیں کہ آپ کی تنخواہیں بڑھادیں؟

رانا تنویر کی زیر صدارت پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں رانا تنویرنےچیئرمین نیب کی خدمات کوکھلےدل سےسراہا

رانا تنویر کی زیر صدارت پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں رانا تنویرنےچیئرمین نیب کی خدمات کوکھلےدل سےسراہا۔ چیئرمین نیب نےپبلک اکاؤنٹس کمیٹی کےاجلاس میں بریفنگ دی کہ نیب نےایک لاکھ 77 ہزارسےزائد سوسائٹیزکےمتاثرین کورقوم دیں،متاثرین کو  25 ارب روپےکی ادائیگیاں کی گئیں،نیب نےمجموعی طورپر  820  ارب روپےریکورکئے، موجودہ چیئرمین کےدورمیں 587ارب روپے ریکورکئےگئےہیں ۔

چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نےکہا کہ اپنےدورمیں ایک روپیہ ادھرسےاُدھرنہیں ہونےدیا،آڈیٹرجنرل نےنیب ریکوریوں کامکمل آڈٹ کیا، ایک ایک پائی کاحساب رکھاہے،آپ حساب لےسکتےہیں،نیب نے 500 ارب روپےبراہ راست ریکورکیے،  198 ارب روپےبینک لون ڈیفالٹرسےوصول کیے، جبکہ  45 ارب روپےعدالتی جرمانےکی مدمیں وصول کیے۔

چیئرمین کمیٹی رانا تنویر حسین نےنیب کی خدمات کوسراہتےہوئےکہا کہ چیئرمین نیب نےاچھاکام کیالیکن ابھی بہت کام کرنیوالےہیں،عمران خان دورمیں گندم اورادویات اسکینڈل پرنیب نےکچھ نہیں کیا،آرایل این جی میں تاخیرسے 20ارب کانقصان ہوا، نیب نےآرایل این جی کی تاخیرپرکوئی تحقیقات نہیں کیں۔

چیئرمین نیب نے کہا کہ  راولپنڈی کی ایک سوسائٹی سےڈھائی ارب روپے  متاثرین کودلوائے، میرےدورمیں نیب نےاچھےکام کیے،ان کی تعریف ہونی چاہئے ۔رانا تنویر حسین نے جواب   دیا کہ اپ کی تعریف ہی کی ہے  اور آپ  کیا چاہتے ہیں کہ آپ کی تنخواہیں بڑھادیں؟۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.