پاکستان

ملک میں بجلی کا شارٹ فال 7 ہزارمیگاواٹ تک پہنچ گیا

رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہےکہ گزشتہ حکومت کی نااہلی کےباعث نندی پورپاور پلانٹ 13 دسمبر 2021 سےبند ہے

ملک میں بجلی کا شارٹ فال 7 ہزارمیگاواٹ تک پہنچ گیا ہے۔ ذرائع وزارت توانائی کا کہنا ہےکہ بجلی کی مجموعی پیداوار 15 ہزار500 اورطلب 21 ہزار500 میگاواٹ ہے۔ اوراس وقت ملک بھرمیں 10 گھنٹےتک بجلی کی لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے۔ وزارت توانائی کےذرائع کا کہنا ہےکہ ہائیڈل پاورپلانٹس 1 ہزارمیگا واٹ بجلی پیدا کررہےہیں،سرکاری تھرمل پاورپلانٹس 2 ہزار 500 میگاواٹ بجلی پیدا کررہےہیں، نجی شعبےکےبجلی گھروں کی پیداوار 12 ہزارمیگا واٹ ہے،بجلی کی مجموعی پیداواری صلاحیت 33 ہزارمیگاواٹ ہے، کم پیداوارسےسسٹم کویومیہ 10 ارب روپےسےزائد کا نقصان ہورہا ہے،اوربعض پاورپلانٹس بند ہونےکےباوجود کپیسٹی پیمنٹ وصول کررہے ہیں۔

دوسری جانب بجلی کی لوڈشیڈنگ کےحوالے تیارکی گئی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہےکہ گزشتہ حکومت کی نااہلی کےباعث نندی پورپاور پلانٹ 13 دسمبر 2021 سےبند ہے،جب کہ نندی پورپاورپلانٹ کی پیداواری صلاحیت 525 میگاواٹ ہے، جام شورپاور پلانٹ 9  اپریل 2022 سے بند ہے، مظفرگڑھ 840 میگاواٹ کا بجلی گھرجو 8 اپریل 2022 سےبند ہے، پورٹ قاسم 621 میگاواٹ بناتا ہےاور 31 مارچ 2022 سے بند ہے، ‏447 میگاواٹ کا گدو پاورپلانٹ 12 فروری 2021 سےبند ہے،  ‏245 میگاواٹ مظفرگڑھ پاور پلانٹ یکم جولائی 2021 سے بند ہے۔

دستاویز کے مطابق  تھرکول پاور پلانٹ 602 میگاواٹ 11 مارچ 2022 سے بند ہے، ‏621 میگاواٹ ساہیوال کول 20 مارچ 2022 سے بند ہے، بجلی گھر ایندھن نہ ہونے کے باعث بند کیے گئے، نندی پور پاورپلانٹ کو 13 دسمبر 2021 سے ایل این جی فراہمی نہیں ہورہی، جب کہ بعض پاورپلانٹس تیکنیکی وجوہات کی بنیاد پربند کیے گئے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.