پاکستانفیچرڈ پوسٹ

پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں کس حد تک بڑھانا پڑیںگی؟ سابق وزیراعظم و مسلم لیگ ن کے رہنماء شاہد خاقان عباسی نے سب کے چھکے چھڑا کر رکھ دیئے

پٹرول 235 اور ڈیزل 264 روپے فی لٹر ہونا چاہیے، شوکت ترین آئی ایم ایف سے ان قیمتوں کا وعدہ کرکے آئے تھے

پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں کس حد تک بڑھانا پڑیںگی؟ سابق وزیراعظم و مسلم لیگ ن کے رہنماء شاہد خاقان عباسی نے سب کے چھکے چھڑا کر رکھ دیئے ۔

تفصیلات کے مطابق شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ گزشتہ حکومت کی ناقص پالیسیوں کاخمیازہ بھگتناپڑ رہاہے، گزشتہ حکومت نے پٹرول کی قیمت 30جون تک 149 روپے برقراررکھنے کا فیصلہ کیا، ایسے لوگ اقتدارمیں رہے جن کوملک کی پرواہ نہیں تھی، یہی حالات بجلی اورگیس سیکٹر میں بھی ہیں، سیاست نہیں کرناچاہتے،حقائق عوام کوبتا رہے ہیں، قیمتوں کے حوالے سے کابینہ کی کوئی منظوری نہیں ہے۔ پچھلی حکومت نے سستی شہرت کیلئے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں برقرار رکھیں،وزیر اعظم شہباز شریف نے اوگرا کی پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھانے کی سفارش کومسترد کردیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ گزشتہ 15روزمیں 35 ارب روپے حکومت نے ادا کیے ہیں، قیمتیں برقراررہیں تو 240 ارب روپے اپنی جیب سے دیناہوں گے، پٹرول کی قیمتیں برقراررکھنے پر 30 ارب کااضافی قرض لیناپڑتاہے، عالمی منڈی میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھ رہی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ اس وقت پٹرول پر 21 اورڈیزل پر 51 روپے حکومت خودادا کررہی ہے، ہرماہ 200 ارب کا اضافی بوجھ پڑے گا، اوگرا کی سفارش کے مطابق پٹرول 235 اور ڈیزل 264 روپے فی لٹر ہونا چاہیے، شوکت ترین آئی ایم ایف سے ان قیمتوں کا وعدہ کرکے آئے تھے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.