پاکستانفیچرڈ پوسٹ

ڈپٹی سپیکر دوست مزاری کو پنجاب اسمبلی کا اجلاس بلانے کا آرڈر واپس لینے پر کس نے اور کیوں مجبور کیا؟ حیران کن خبر سامنے آنے کے بعد سب کے ہوش اڑ گئے

وزیراعلیٰ کے انتخاب کے بعد ڈپٹی اسپیکر کے پاس اسپیکر کے اختیارات نہیں رہے ، ڈپٹی اسپیکر کیخلاف تحریک عدم اعتماد پہلے جمع ہوئی اس لیے اس پرپہلے ووٹنگ ہوگی

ڈپٹی سپیکر دوست مزاری کو پنجاب اسمبلی کا اجلاس بلانے کا آرڈر واپس لینے پر کس نے اور کیوں مجبور کیا؟ حیران کن خبر سامنے آنے کے بعد سب کے ہوش اڑ گئے۔

تفصیلات کے مطابق دوست مزاری نے صوبائی اسمبلی کا اجلاس پیر کی صبح ساڑھے 11 بجے طلب کیا تھا جس کے ایجنڈے میں اسپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ شامل تھی تاہم ڈپٹی اسپیکر پنجاب اسمبلی کو اسمبلی اجلاس بلانے کا اپنا آرڈر کچھ دیر بعد ہی واپس لینا پڑ گیا ۔ اس حوالے سے ترجمان پنجاب اسمبلی نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ کے انتخاب کے بعد ڈپٹی اسپیکر کے پاس اسپیکر کے اختیارات نہیں رہے ، ڈپٹی اسپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد پہلے جمع ہوئی اس لیے اس پرپہلے ووٹنگ ہوگی۔ دوسری طرف تحریک انصاف نے وزیر اعلی پنجاب کا انتخاب عدالت میں چیلنج کرنے کا اعلان کردیا ، پنجاب کے نئے قائد ایوان کے انتخاب کے بعد تحریک انصاف کے رہنما فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ حمزہ شہباز نے پنجاب اسمبلی میں غنڈہ گردی کی روایت قائم کر دی، پنجاب کی تاریخ میں کبھی پولیس اسمبلی ہال میں داخل نہیں ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ پرویز الٰہی کے فوٹوگرافر پر بھی قاتلانہ حملہ کیا گیا, وہ شدید زخمی ہیں، اسمبلی گیلری کبھی آئینی نہیں ہوتی وہاں ووٹنگ کرائی گئی، وزیراعلی انتخابی عمل نہیں مانتے ، وزیر اعلیٰ پنجاب کا انتخاب عدالت میں چیلنج کریں گے، امید کرتے ہیں عدالت ویسے ہی سوموٹو لیگی جیسے لیا گیا تھا، عدالت سے درخواست کرتے ہیں کہ اب اتوار کو بھی عدالت کھول لیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.