پاکستانفیچرڈ پوسٹ

وزیراعظم شہباز شریف کا سربراہ ق لیگ چوہدری شجاعت سے رابطہ، کیا معاملات طے پائے؟ اندرونی کہانی سامنے آنے پر قومی سیاست میں نیا طوفان برپا ہوگیا

ملک کو درپیش چیلنجز پر قابو پانا ہماری ترجیح،عوام کے اصل مسائل الیکشن کرانا نہیں، عوامی مسائل غربت دورکرنا، مہنگائی کنٹرول کرنافرض ہے

وزیراعظم شہباز شریف کا سربراہ ق لیگ چوہدری شجاعت سے رابطہ، کیا معاملات طے پائے؟ اندرونی کہانی سامنے آنے پر قومی سیاست میں نیا طوفان برپا ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم شہبازشریف نے سربراہ ق لیگ چودھری شجاعت سے ٹیلیفونک رابطہ کیا، جس میں وزیراعظم شہبازشریف نے چودھری سالک کے وفاقی وزیر بننے پرانہیں مبارکباد دی، چودھری شجاعت نے کہا کہ سالک کو نصیحت کی ہے کہ تکبر اور منافقت کی سیاست سے بچیں، ق لیگ کے دونوں وزراء قومی سلامتی پر کوئی سودے بازی نہیں کریں گے،ملک کو درپیش چیلنجز پر قابو پانا ہماری ترجیح ہے،عوام کے اصل مسائل الیکشن کرانا نہیں، عوامی مسائل غربت دورکرنا، مہنگائی کنٹرول کرنااور ملازمین کو ریلیف دینا ہے۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم شہبازشریف نے سربراہ ق لیگ چودھری شجاعت سے ٹیلیفونک رابطہ کیا، جس میں وزیراعظم شہبازشریف نے چودھری سالک کے وفاقی وزیر بننے پرانہیں مبارکباد دی۔ چودھری شجاعت نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سالک کو ہدایت کی ہے کہ تکبر اور منافقت کی سیاست سے بچیں، ق لیگ کے دونوں وزراء پاکستان کے مفاد اور قومی سلامتی پر کوئی سودے بازی نہیں کریں گے، ہمارے لیے سب سے پہلے پاکستان ہے، چیلنجز پر قابوپانا ترجیح ہے، رواداری اور وضع داری ہمارا شیوہ ہے، ہمیں بزرگوں نے جو درس دیا وہی نوجوانوں کو دیا ہے۔ اس سے قبل مسلم لیگ ق کے سربراہ چوہدری شجاعت نے کہا تھا کہ سالک حسین نے میرے مشورے سے شہباز شریف کو وزارت عظمی کا ووٹ دیا تھا۔ اپنے ایک وڈیو بیان میں کہا کہ میرے بیٹے چوہدری سالک حسین نے میرے مشورے سے شہباز شریف کو وزارت عظمی کا ووٹ دیا تھا۔ چوہدری سالک حسین نے وفاقی وزیر کا حلف بھی اٹھا لیا ہے۔ ایوان صدر میں حلف برداری کی تقریب ہوئی جس میں چوہدری شجاعت کے بیٹے سالک حسین،مسلم لیگ ن کے جاوید لطیف اور بی این پی مینگل کے آغا حسن بلوچ نے بھی وفاقی وزرا کا حلف اٹھایا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.