پاکستان

ادارے اور مراسلہ لکھنے والے سفیرمتفق ہیں، حنا ربانی کھر نے بڑا بیان داغ دیا

قومی سلامتی کمیٹی میں اسد مجید سے سائفر سے متعلق پوچھا گیا، سفیر نے وضاحت کے ساتھ سائفر کے مندرجات سے نیشنل سکیورٹی کمیٹی کوآگاہ کیا

وزیر مملکت برائے خارجہ امور حنا ربانی کھر نے کہا ہے کہ پاکستانی سفیر اسد مجید نے پروفیشنل طریقے سے ڈی مارش کی سفارش کی لیکن اسے سیاست کی نذرکردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق حنا ربانی کھر کا کہنا تھاکہ آج قومی سلامتی کمیٹی میں اسد مجید سے سائفر سے متعلق پوچھا گیا، سفیر نے وضاحت کے ساتھ سائفر کے مندرجات سے نیشنل سکیورٹی کمیٹی کوآگاہ کیا۔ ان کا کہنا تھاکہ سائفرمیں جوزبان استعمال کی گئی اس کی بنیاد پرسفیر نے ڈی مارش کی تجویزدی تھی، سفیرنیکہاسائفرمیں جوزبان استعمال کی گئی وہ غیرمعمولی تھی، اسد مجید نے پروفیشنل انداز میں اپنافرض اداکیا۔ خارجہ حناربانی کھر کا کہنا تھاکہ سائفرمیں افغانستان، یوکرین اور پاک امریکا تعلقات پربات کی گئی تھی، سابق حکومت نے اس سائفر کو کبھی خط کہاتوکبھی مراسلہ کہا، اتنی بڑی دھمکی تھی تو اسلام آباد میں امریکی سفارتخانے سیاحتجاج کیوں نہیں کیا؟ مراسلہ آنے کے بعد کئی روز خاموش کیوں بیٹھے رہے؟ ان کا کہنا تھاکہ ادارے اور مراسلہ لکھنے والے سفیرمتفق ہیں اسے سازش نہیں کہاجاسکتا، سابقہ حکومت کی جانب سیجھوٹ اس تواترسے بولا گیا کہ سچ محسوس ہونے لگے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.