پاکستانفیچرڈ پوسٹ

لندن میں ”ایمرجنگ پاکستان“ مہم کا آغاز، ہر طرف شریف برادران کی تصاویر لگ گئیں، سرمایہ کون خرچ کر رہا ہے؟ بڑا دعویٰ منظر عام پر آگیا

”ایمرجنگ پاکستان“ مہم میں 150 ڈبل ڈیکر بسیں شامل ہیں اور سرمایہ ایک برطانوی نژاد پاکستانی تاجر لگا رہا ہے

لندن میں ”ایمرجنگ پاکستان“ مہم کا آغاز، ہر طرف شریف برادران کی تصاویر لگ گئیں، سرمایہ کون خرچ کر رہا ہے؟ بڑا دعویٰ منظر عام پر آگیا۔

تفصیلات کے مطابق لندن میں ایمرجنگ پاکستان مہم کا آغاز ہوگیا ہے، سرخ ڈبل ڈیکر بسوں پر پاکستان کے وزیر اعظم شہباز شریف اور مسلم لیگ (ن)کے قائد نواز شریف کی تصاویر کے ساتھ "ابھرتا ہوا پاکستان کا نعرہ درج کیاگیا۔بتایا گیا ہے کہ اس مہم میں 150 ڈبل ڈیکر بسیں شامل ہیں اور سرمایہ ایک برطانوی نژاد پاکستانی تاجر لگا رہا ہے،لندن کی معروف اشتہاری ایجنسیوں کا تخمینہ ہے کہ اس قسم کی مہم پر تقریبا 100,000 پاؤنڈ (2 کروڑ 30 لاکھ روپے سے زائد)خرچ ہوں گے۔

گزشتہ بدھ کو شروع ہونیوالی یہ مہم 1 ماہ تک جاری رہے گی۔ ایک اندازے کے مطابق لندن کے ایک وسیع نیٹ ورک کے ارد گرد دسیوں ہزار لوگ ان بسوں کو دیکھیں گے جن میں پاکستانی پرچم، ابھرتا ہوا پاکستان کا نعرہ اور نواز شریف اور شہباز شریف کی تصاویر ہوں گی۔ رپورٹس کے مطابق تقریبا 150 بسیں لندن کے 43 مصروف ترین روٹس پر چلیں گی، یہ بسیں مصروف روٹس پر صبح سویرے سے آدھی رات تک دونوں سمتوں میں چلتی ہیں۔سرمایہ لگانے والے تاجر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پربتایا کہ اس مہم کے دوران دسیوں ہزار لوگوں کو پاکستان کے بارے میں جاننے کا موقع ملے گا،ہمیں یقین ہے کہ مہم ختم ہونے تک لاکھوں لوگ ان بسوں کو دیکھ چکے ہوں گے۔ ان کا کہناتھاکہ "ان منقسم اوقات میں میں پاکستان کو خراج تحسین پیش کرنا چاہتا تھا اور سب کو یاد دلانا چاہتا تھا کہ ”ایمرجنگ پاکستان“برانڈ 2013-2018 کی مسلم لیگ(ن)کی حکومت نے اس وقت شروع کیا تھا جب پاکستان کی جی ڈی پی کی شرح نمو 6 فیصد کو چھو رہی تھی اور پاکستان کو باضابطہ طور پر مورگن میں درجہ بندی کیا گیا تھا۔ تاجر کا خیال ہے کہ شہباز شریف ایک ”زبردست لیڈر ہیں اور پنجاب کی موسمیاتی ترقی“ان کی قابلیت کا "ثبوت ہے۔ برطانوی پاکستانی تاجر نے کہا کہ بس مہم کا مقصد پاکستان میں غیر ملکی سرمایہ کاری کو دوبارہ متعارف کرانا ہے,پاکستان کو سرمایہ کاری اور استحکام کی ضرورت ہے۔ پاکستان ہائی کمیشن نے تصدیق کی ہے کہ انہوں نے تازہ ترین بس مہم کا آغاز نہیں کیا، یہ بھی نہیں جانتے کہ اس مہم کا سپانسر کون ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.