پاکستان

فواد چوہدری کو قومی اسمبلی جانے کا مشورہ

اسلام آباد ہائی کورٹ کےچیف جسٹس نےریمارکس دیےہیں کہ 9 اپریل کوتجزیہ کاروں نےاپنےتجزیوں سےمارشل لا لگا دیا تھا

اسلام آباد ہائی کورٹ کےچیف جسٹس اطہرمن اللہ نےریمارکس دیےہیں کہ 9 اپریل کوتجزیہ کاروں نےاپنےتجزیوں سےمارشل لا لگا دیا تھا، میڈیا فوجی گاڑیاں اورہیلی کاپٹردکھا رہا تھا۔ چیف جسٹس اطہرمن اللہ نےصحافی کی ایف آئی اے کی جانب سےہراساں کرنےکےخلاف درخواست کی سماعت کی۔ نجی چینل کےبیوروچیف پیش نہیں ہوئے۔ وکیل فیصل چوہدری ایڈووکیٹ نےکہا کہ صحافی سعودی عرب سے واپس نہیں آرہے،انہیں خدشہ ہےکہ ان کوگرفتارکیا جا سکتا ہے۔عدالت نےڈائریکٹرایف آئی اے کواختیارات کا غلط استعمال نا کرنےکا حکم دے دیا۔

چیف جسٹس نےکہا کہ 9 اپریل کی ٹرانسمیشن دیکھیں،سارے تجزیہ کاروں نےاپنےتجزیوں سےاس دن تومارشل لا ہی نافذ کردیا تھا، میڈیا آرمی کی گاڑیاں اورہیلی کاپٹردکھا رہا تھا،میں گھرپربیٹھا تھا اورٹی وی پرچل رہا تھا کہ چیف جسٹس عدالت پہنچ گئے۔ صدرپی ایف یوجے نےکہا کہ ہرحکومت ایف آئی اے کواپنےمقاصد کےلیےاستعمال کرتی ہےاوریہ گورنمنٹ بھی کرے گی،ہم چاہتےہیں کہ پٹیشن نمٹانےکے بجائےملتوی رکھی جائےتاکہ ہماری بھی تسلی رہے۔

چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ نےفواد چوہدری سےکہا کہ آپ بطوررکن اسمبلی ڈی نوٹیفائی نہیں ہوئے،تجویزہےاسمبلی ہی جا کرتوہین مذہب اورایف آئی اے کارروائیوں جیسےمعاملات حل کروائیں۔ فواد چوہدری نےجواب دیا کہ مقبوضہ اسمبلی میں جا کرکیا کریں،الیکشن کے بعد ہی اس میں بیٹھیں گے۔ سماعت کےبعد بھی میڈیا سےگفتگوکرتےہوئےفواد چوہدری نےکہا کہ میں کہہ چکا ہوں مقبوضہ اسمبلی واپس نہیں جائیں گے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.