پاکستانفیچرڈ پوسٹ

خلیجی ممالک سے آنے والے مسافروں کے ساتھ کیا سلوک کیا جائے گا؟ سول ایوی ایشن اتھارٹی کا نیا منصوبہ بے نقاب ہونے کے بعد سب حیران رہ گئے

پاکستان میں اومیکرون کی نئی قسم کے پہلے کیس کی نشاندہی کے بعد سعودی عرب سمیت تمام خلیجی ممالک سے آنے والے مسافروں کی اسکریننگ کا فیصلہ

خلیجی ممالک سے آنے والے مسافروں کے ساتھ کیا سلوک کیا جائے گا؟ سول ایوی ایشن اتھارٹی کا نیا منصوبہ بے نقاب ہونے کے بعد سب حیران رہ گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان میں اومیکرون کی نئی قسم کا پہلا کیس رپورٹ ہونے کے بعد سول ایوی ایشن اتھارٹی اور سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول نیشنل انسٹیوٹ آف ہیلتھ نے بین الاقوامی ہوائی اڈوں پر اسکریننگ کے انتظامات مکمل کرلیے۔ اقدامات وزیر سحت کی ہدایات کی روشنی میں عمل میں لائے گئے ہیں جس کے تحت سعودی عرب سمیت تمام خلیجی ریاستوں سے آنے والوں کی اسکریننگ کی جائے گی۔ اسکرینگ کا عمل آج رات 12 بج کر 1 منٹ پر اسلام آباد، لاہور اور کراچی کے ایئرپورٹس پر شروع کردیا جائے گا، جس کا مقصد اومیکرون کی نئی قسم کا پتہ چلانا ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ریپڈ اینٹیجن ٹیسٹ کے ذریعے محدود رینڈم اسکریننگ ہوگی۔

ایئرپورٹ حکام کا کہنا ہے کہ ابتدا میں 150 افراد تک کے حامل چھوٹے طیاروں کے مسافروں میں سے 10 سے 15 مسافروں کے ٹیسٹ ہونگے جبکہ 250 یا اس زائد مسافروں کے حامل بڑے طیاروں کی صورت میں 15 سے 20 مسافروں کے ریپڈ سکرینگ ٹیسٹ ہوں گے۔ ترجمان سول سوی ایوی ایشن اتھارٹی کا کہنا تھا کہ سکرینگ کے لیے ریپڈ اینٹیجن ٹیسٹوں کا عمل سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول کے آئندہ احکامات ملنے تک جاری رھے گا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.