پاکستان

بدترین لوڈشیڈنگ:وزیراعظم وزراء اورافسران پربرس پڑے

شہبازشریف نےاظہاربرہمی کرتےہوئےکہا کہ لوڈ شیڈنگ 10 گھنٹے سےزائد ہے

ملک بھرمیں جاری بدترین لوڈشیڈنگ پرہنگامی اجلاس میں وزیراعظم شہبازشریف وزراء اورافسران پربرس پڑے۔ اجلاس میں وزیراعظم کوبتایا گیا کہ صرف 2 گھنٹےکی لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے۔ وزیراعظم شہبازشریف نےاظہاربرہمی کرتےہوئےکہا کہ لوڈ شیڈنگ 10 گھنٹے سےزائد ہے۔ انہوں نےکہا کہ میں آپ کےجھوٹ تسلیم کرنےکوتیارنہیں،اگرآپ مجھےلوڈشیڈنگ کی یہ تاویل دے رہےہیں تومیں نہیں مانتا۔ ذرائع کےمطابق وزیراعظم نےکہا کہ کچھ بھی کریں، 2 گھنٹےسےزیادہ لوڈشیڈنگ کےعلاوہ کچھ برداشت نہیں۔ وزیراعظم نےوزراء اور حکام کی وضاحتیں مسترد کردیں،انہوں نےکہا کہ عوام کومشکل سےنکالیں،مجھےوضاحتیں نہیں چاہئیں۔

شہبازشریف نےکہا کہ عوام کولوڈشیڈنگ کی تکلیف سےنجات چاہیے،عوام تکلیف میں ہوں اِس پرکوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا۔ وزیراعظم نےایف آئی اے میں پیشی کےفوراً بعد وزارت توانائی کےوزراء اوراعلیٰ حکام کولاہورطلب کیا تھا۔ ذرائع کےمطابق شاہد خاقان عباسی،مفتاح اسماعیل، مصدق ملک اورمسلم لیگ (ن) کےسینئررہنما اجلاس میں شریک ہیں۔ وزیراعظم کی زیرصدارت اجلاس میں ملک میں لوڈشیڈنگ کی صورتحال پرغورکیا جارہا ہے۔ لوڈ شیڈنگ کی وجوہات، محرکات اوراس کےسدباب کےلیےاقدامات کا جائزہ لیا جارہا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.