پاکستان

پی ٹی آئی حکومت نےآئی ایم ایف سے 1 ارب ڈالرلیے

مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) سےڈیل کی اور 1 ارب ڈالروصول کیےلیکن معاہدے پر عمل درآمد نہیں کیا

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) حکومت نےعالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) سےڈیل کی اور 1 ارب ڈالروصول کیےلیکن معاہدے پر عمل درآمد نہیں کیا۔ آئی ایم ایف سےمعاہدے پرسابق وفاقی وزیرخزانہ شوکت ترین اورسابق گورنراسٹیٹ بینک رضا باقرنےدستخط کیے۔ دستاویزکےمطابق پاکستان نےاس سلسلےمیں یقین دہانی 17دسمبر 2021 کوکرائی تھی، 4 فروری کودستخط کےبعد پاکستان کو 1 ارب ڈالرز سےزائد کی قسط جاری ہوئی۔ آئی ایم ایف سےپیسےملنےکےبعد معاہدے پرعمل درآمد نہیں ہوا جبکہ ان شرائط پرعمل کرکےپاکستان کومزید قرض ملنا تھا۔ پی ٹی آئی حکومت نےنا صرف پیٹرولیم لیوی میں اضافہ روکا بلکہ سیلزٹیکس بھی زیروکردیا۔

پی ٹی آئی حکومت نےآئی ایم ایف سےمعاہدہ کیا کہ پیٹرولیم مصنوعات پرہرماہ 4 روپےفی لیٹرپیٹرولیم لیوی بڑھائی جائےگی۔ سابقہ حکومت نےمعاہدہ کیا کہ پیٹرولیم لیوی میں تسلسل سےاضافہ کیا جائےگا اوراسے 30 روپےفی لیٹرتک لےجایا جائےگا۔ معاہدے کےتحت پاکستان کو گزشتہ سال 5 نومبراوریکم دسمبرکوپیٹرول اورڈیزل پر 4 روپےفی لیٹرپیٹرولیم لیوی بڑھانا تھی۔ رواں سال یکم جنوری کوبھی پیٹرول اور ڈیزل پر 4 روپےفی لیٹرپٹرولیم لیوی بڑھانا تھی،معاہدے کےبرعکس جنوری کےبعد پیٹرولیم لیوی میں اضافہ نہیں کیا گیا اورسیلزٹیکس بھی صفرکردیا گیا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.