پاکستان

عمران خان نےجاتےہوئےایسا چیک لکھا جس پرکیش ہی نہیں تھا

مفتاح اسماعیل نےکہا کہ لوڈشیڈنگ ہورہی ہے،معیشت خراب ہورہی ہےتوملک کی ہورہی ہے

وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کا کہنا ہے کہ تجارتی خسارہ 45 ارب ڈالرز کا ہوچکا، خان صاب نے جانے سے پہلے پیٹرول ڈیزل سستا کرکے عوام کو ایسا چیک لکھ کر دیا جس کے لیے کیش تھا ہی نہیں، بارودی سرنگیں صرف حکومت کے لیے نہیں ملک کے لیے تھیں۔ وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل نے رواں مالی سال کا اقتصادی جائزہ پیش کردیا۔

مالی سال 22-2021 اقتصادی جائزہ رپورٹ کےاجراء کی تقریب سےخطاب کرتےہوئےمفتاح اسماعیل نےکہا کہ لوڈشیڈنگ ہورہی ہے، معیشت خراب ہورہی ہےتوملک کی ہورہی ہے،خان صاحب نےملک کونقصان پہنچایا،گندم اورچینی جو 18-2017 میں ایکسپورٹ کررہے تھےاب امپورٹ کریں گے،پاکستان کئی چیزوں میں پیچھےچلا گیا،اِس وقت بڑا چیلنج مستحکم گروتھ لانا ہے۔ جائزہ رپورٹ کے اجراء کی تقریب میں وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل،وفاقی وزراء احسن اقبال،خرم دستگیر،وزیرمملکت عائشہ غوث پاشا بھی تقریب میں موجود تھے ۔

وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ جب بھی تھوڑی سی گروتھ ہوتی ہے ہم کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں پھنس جاتے ہیں، ملک کا تجارتی خسارہ 45 ارب ڈالر تک پہنچ گیا ہے، اس سال ہماری درآمدات 76 ارب ڈالر تک پہنچ جائیں گی۔ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ چین سے 2 ارب 40 کروڑ ڈالر مل رہے ہیں، جس پر شکر گزار ہیں، متوسط طبقے کو مراعات دیکر ترقی لائیں گے، ہر انڈسٹری کو گیس دے رہے ہیں، امراء کو مراعات دینے سے درآمدی بل بہت بڑھ جاتا ہے۔

وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ سابق حکومت کورونا کے دوران سودے کر لیتی تو شاید مہنگائی نہ آتی، بجلی کے پلانٹس چلانے کیلئے ہمیں ایندھن لینا پڑ رہا ہے، سی پیک کے ساتھ سوتیلے پن کا سلوک کیا گیا۔ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ شیخ رشید خود کہہ چکے ہیں، خان صاحب بارودی سرنگیں بچھا کر گئے، بارودی سرنگیں ریاست پاکستان کے لیے تھیں، پچھلی حکومت کو کورونا کے دنوں میں تیل کے لمبی مدت کے سودے کرنے چاہیے تھے۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ کورونا کے بعد تیل اور گیس سستی ہوئی اور پچھلی حکومت نے اس کو مس کیا، کورونا کے دوران جی 20 ممالک نے چار ارب ڈالر کی سہولت دی۔ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ گندم بھی آج امپورٹ کرنا پڑ رہی ہے، روس سے گندم خرید کرنے کا فیصلہ کیا ہے، اس سال 30 لاکھ ٹن گندم درآمد کر رہے ہیں، روس سے حکومتی سطح پر بات ہو گی۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ سابق حکومت براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری سوا ارب ڈالر پر لے آئی، چار سالوں میں 20 ہزار ارب روپے قرضہ لیا گیا،  پی ٹی آئی حکومت میں معاشی شرح نمو منفی میں بھی گئی۔ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ پاکستان میں  2.4 فیصد کی شرح  سے آبادی بڑھ رہی ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.