پاکستان

منحرف ارکان کا ووٹ شمار نہیں ہوگا تو حمزہ شہباز کی قانونی حیثیت کیا ہوگی؟

حمزہ شہباز کی حلف برداری کے لیے اسپیکر قومی اسمبلی کو نامزد کرنے کے خلاف اپیلوں پر سماعت 15 جون تک ملتوی کر دی

پنجاب اسمبلی کے منحرف ارکان کا اگر ووٹ شمار نہیں ہوتا تو پھر وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز کی قانونی حیثیت کیا ہوگی؟ اس حوالہ سے اہم رپورٹ سامنے آئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس صداقت علی خان کی سربراہی میں 5 رکنی فل بینچ نے تحریک انصاف اور پرویز الٰہی کی اپیلوں پر سماعت کی۔ وزیر اعلیٰ حمزہ شہباز کے وکیل منصور عثمان اعوان نے اپنے دلائل میں کہا کہ گورنر پنجاب نے منتخب وزیر اعلیٰ سے حلف نہ لیکر اپنی ذمہ داری ادا نہیں کی،گورنر کے پاس وزیر اعلی کے انتخاب کی قانونی حیثیت پرکھنے کا اختیار نہیں۔ فل بینچ نے استفسار کیا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے تحت اگر منحرف ارکان کا ووٹ شمار نہیں ہوگا تو پھر وزیراعلی کی قانونی حیثیت کیا ہوگی؟

حمزہ شہباز کے وکیل نے نکتہ اٹھایا کہ ابھی سپریم کورٹ کا تفصیلی فیصلہ آنا ہے اور ویسے بھی سپریم کورٹ کے فیصلے کا اطلاق ماضی سے نہیں ہوگا۔ عدالت نے سوال کیا کہ کیا گورنر ربر اسٹیمپ کی طرح کام کرتا ہے یا وہ الیکشن کی قانونی حیثیت پر سوال اٹھا کر وزیر اعلی کے حلف اٹھانے کی سمری واپس بھیج سکتا ہے؟ حمزہ شہباز کے وکیل نے بتایا کہ اگر عدم اعتماد کی تحریک کے نتیجے میں وزیر اعلی عہدے سے الگ ہو اور کوئی دوسرا رکن بار بار انتخاب میں اکثریت حاصل نہ کر سکے تو ایسی صورت میں گورنر کے پاس کچھ اختیارات ہیں ۔عدالت نے اپیلوں پر مزید کارروائی 15 جون تک ملتوی کردی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.