پاکستانفیچرڈ پوسٹ

سابق وزیر اعظم بے نظیر بھٹو قتل کیس ‘ پرویز مشرف کو کیس میں ملوث کرنے کیلئے کس نے دبائو ڈالا؟ سابق سینئر پولیس افسر رائو انور نے نام بتا کر تھرتھرلی مچا دی

رحمان ملک کا دباؤ تھا کہ بینظیر بھٹو کے قتل میں جنرل مشرف کو ملوث کیا جائے ، مجھے سابق صدر پرویز مشرف کا بینظیر قتل کیس میں کردار کہیں نظر نہیں آیا

سابق وزیر اعظم بے نظیر بھٹو قتل کیس ‘ پرویز مشرف کو کیس میں ملوث کرنے کیلئے کس نے دبائو ڈالا؟ سابق سینئر پولیس افسر رائو انور نے نام بتا کر تھرتھرلی مچا دی ۔

تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی مظہر عباس نے رپورٹ کیا ہے کہ راؤ انوار نے انکشاف کیا کہ بینظیر قتل کیس کی تحقیقات صحیح انداز میں نہیں چلائی گئیں ، اس وقت کے وزیرِ داخلہ رحمان ملک کا دباؤ تھا کہ بے نظیر بھٹو کے قتل میں جنرل مشرف کو ملوث کیا جائے ، مجھے سابق صدر پرویز مشرف کا بینظیر قتل کیس میں کردار کہیں نظر نہیں آیا اور اس حوالے سے جب شواہد مانگے گئے تو وہ بھی نہیں ملے ، تحقیقات کو صحیح انداز میں نہیں آگے بڑھایا گیا اور بہت سی چیزیں چھپائی جارہی تھیں اس لیے میں نے جے آئی ٹی پر دستخط سے انکار کردیا۔ اس حوالے سے راؤ انوار نے مزید بتایا کہ ایک بار وہ سابق صدر آصف علی زرداری سے ملنے گئے اور ان سے بلیک بیری فونز کے بارے میں پوچھا تو انہوں نے مجھے رحمان ملک کے پاس بھیج دیا ، جب میں نے رحمان ملک سے فونز کے حوالے سے سوال کیا تو انہوں نے صاف انکار کر دیا کہ ان کے پاس کوئی فون نہیں ، پھر انہوں نے طیش میں آ کر سوال کیا کہ آخر میں زرداری صاحب کے پاس کیوں گیا؟۔

سابق پولیس افسر را انوار نے یہ انکشاف بھی کیا کہ طیب محسود کی قیادت میں ایک اور دہشت گرد گروپ 18 اکتوبر 2007 کو کراچی میں بے نظیر بھٹو کی وطن آمد کے موقع پر ہوئے خودکش حملے میں ملوث تھا ، جس میں 180 افراد شہید ہوئے تاہم سابق وزیرِ داخلہ رحمان ملک کو بے نظیر بھٹو کی سکیورٹی کے سربراہ کے طور پر اس کیس کی تفتیش کرنی چاہیے تھی لیکن انہوں نے ایسا نہیں کیا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.