پاکستانفیچرڈ پوسٹ

پاکستان میں لگائے جانے والے اب تک کے تمام چائے کی پیداوار کے منصوبے کیوں ناکام ہوئے؟ حکومتی لاپرواہی کے تمام ثبوت منظر عام پر آگئے

پاکستان میں لگائے جانے والے اب تک کے تمام چائے کی پیداوار کے منصوبے کیوں ناکام ہوئے؟ حکومتی لاپرواہی کے تمام ثبوت منظر عام پر آگئے ۔

تفصیلات کے مطابق میں نے سنہ 2000 میں بہت شوق اور جذبے کے ساتھ آٹھ کنال اراضی پر چائے کاشت کی تھی۔ اس پر بہت محنت لگی تھی اور کافی اخراجات بھی۔ مگر 2005 میں مجبوری کے عالم میں کاشت لیے بغیر ہی اپنے کھیت سے چائے کے باغ کو ختم کرنا پڑا اور ایسا صرف میرے ساتھ ہی نہیں ہوا۔ میرے کھیتوں کے ساتھ لگ بھگ پندرہ مزید کاشتکاروں نے چائے کاشت کی تھی مگر ان کے ہاتھ بھی ناکامی کے سوا کچھ نہ آیا۔ یہ کہنا ہے صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع مانسہرہ کے علاقے شنکیاری کے رہائشی محمد اختر نعیم کا جو کہ ترقی پسند کاشتکار اور مصنف ہونے کے علاوہ چائے کی کاشت سے متعلقہ امور کی سمجھ بوجھ رکھتے ہیں۔

وزیر برائے منصوبہ بندی احسن اقبال نے گذشتہ دونوں سوشل میڈیا پر پاکستانی عوام سے اپیل کی تھی کہ وہ چائے کی درآمدات پر خرچ ہونے والے زرمبادلہ کے ذخائر بچانے کے لیے دن میں ایک کپ چائے کم پینا شروع کر دیں جس پر سوشل میڈیا پر بحث کا ایک نیا سلسلہ شروع ہوا تھا۔ پاکستان کے سرکاری اور چائے کے کاروبار سے منسلک اداروں کے مطابق پاکستان میں ہر سال تقریبا دو کھرب روپے کی چائے قانونی طور پر درآمد کی جاتی ہے جبکہ محتاط اندازوں کے مطابق قانونی طور پر درآمد ہونے والے چائے کے علاوہ لگ بھگ ایک کھرب کی چائے پاکستان میں غیر قانونی طور پر لائی جا رہی ہے۔ پاکستانی چائے چھوڑ پینا کم کر سکتے ہیں یا نہیں، اس بارے میں مختلف آرا ہیں۔ کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ اب چائے پاکستان میں ایک ثقافت اور زندگی کا لازمی جز بن چکی ہے۔ شام کو دوستوں کی محفل ہو، مہمانوں کی مہمان نوازی یا صبح کا ناشتہ اس میں چائے لازمی جز ہے۔ چائے کم کر کے زرمبادلہ کے ذخائر کو بچایا جا سکتا ہے کہ نہیں؟ اس بحث کو سوشل میڈیا تک ہی چھوڑتے ہیں۔ یہاں پر ہم جائزہ لیتے ہیں کہ پاکستان کو چائے درآمد کیوں کرنا پڑتی ہے اور پاکستان اب تک چائے کی کاشت کے قابل کیوں نہیں ہو سکا۔ محمد اختر نعیم دعوی کرتے ہیں کہ پاکستان میں چائے کی کاشت بالکل ممکن ہے اور اس کے کامیاب تجربے بھی ہو چکے ہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.