پاکستانفیچرڈ پوسٹ

وفاقی وزیر احسن اقبال نے عوام کو چائے کم پینے کا مشورہ کیوں دیا، اصل مقاصد کیا تھے؟ سینئر صحافی و کالم نگار جاوید چوہدری نے تلخ حقائق کھول کر رکھ دیئے

ہم سالانہ چائے کی امپورٹ پر دو اڑھائی سو ارب روپے خرچ کر دیتے ہیں یوں ہم ایک طرف چائے کی امپورٹ پر کثیر سرمایہ ضایع کر رہے ہیں

وفاقی وزیر احسن اقبال نے عوام کو چائے کم پینے کا مشورہ کیوں دیا، اصل مقاصد کیا تھے؟ سینئر صحافی و کالم نگار جاوید چوہدری نے تلخ حقائق کھول کر رکھ دیئے۔

تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی و کالم نگار جاوید چوہدری کا کہنا تھا کہ احسن اقبال نے چند دن قبل قوم سے چائے کے ایک دو کپ کم کرنے کی درخواست کی اور یہ درخواست سوشل میڈیا پر مذاق بن گئی قوم کا ردعمل حیران کن تھا اور یہ ثابت کرتا ہے ملک میں عقل کی بات جرم بن چکی ہے اور ہم صرف جذبات میں زندہ رہنا چاہتے ہیں چائے نہ صرف صحت کے لیے مضر ہے بلکہ ہم سالانہ چائے کی امپورٹ پر دو اڑھائی سو ارب روپے بھی خرچ کر دیتے ہیں یوں ہم ایک طرف چائے کی امپورٹ پر کثیر سرمایہ ضایع کر رہے ہیں اور دوسری طرف چائے گیارہ بیماریوں کا باعث بھی بن رہی ہے اور ان بیماریوں میں بلڈپریشر نیند کی کمی اور بدہضمی بھی شامل ہے۔

آپ کسی بھی بیماری میں مبتلا ہو کر ڈاکٹر کے پاس جائیں وہ آپ کو چائے اور سگریٹ کی کمی کا مشورہ دے گا لہذا احسن اقبال نے ایک دو کپ چائے کم کرنے کا مشورہ دے کر کیا جرم کر دیا؟ ہم دراصل من حیث القوم عقل کی بات سننا پڑھنا اور سمجھنا ہی نہیں چاہتے آپ کو یاد ہو گا سوا تین سال قبل غلام سرور خان نے گیزر کولگژری کہا تھاصوبائی اسپیکر مشتاق غنی نے دو کی جگہ ایک روٹی اورعلی امین گنڈا پور نے چینی کم استعمال کرنے کا مشورہ دیا تھا تو وہ لوگ بھی مذاق بن گئے تھے اور آج اگر حکومت بجلی کم استعمال کرنے مارکیٹیں نو بجے بند کرنے اور بلاوجہ گاڑی نہ چلانے کا مشورہ دے رہی ہے تو یہ بھی مذاق ہے! کیا قوموں کو بچت نہیں کرنی چاہیے اور کیا ہم سب کو اپنے وسائل کی چادر میں نہیں رہنا چاہیے؟

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.