پاکستان

بجلی کی قیمت میں مزید اضافےکی منظوری دیدی گئی

اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے کےالیکٹرک کیلیےبجلی کی فی یونٹ قیمت میں 0.571 روپےاضافے کی منظوری دیدی

کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے کےالیکٹرک کیلیےبجلی کی فی یونٹ قیمت میں 0.571 روپےاضافے کی منظوری دیدی، آرایل این جی پرچلنےوالےپاورپلانٹس کوادائیگیوں کی مد میں 17ارب روپے اوروزیراعظم کے معاونتی پیکیج کے تحت اسلام آباد پولیس کے شہداء کےخاندانوں کی معاونت کیلیےایک ارب 22کروڑ روپےکی ضمنی گرانٹ کی بھی منظوری دے دی۔

کابینہ اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس گذشتہ روز(بدھ )وفاقی وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل کی زیرصدارت منعقد ہوا۔ اجلاس میں وفاقی وزیر منصوبہ بندی احسن اقبال،وفاقی وزیرقومی غذائی تحفظ طارق بشیرچیمہ،وفاقی وزیرتجارت سید نوید قمر،وفاقی وزیرصنعت وپیداوارسید مرتضیٰ محمود،وزیرمملکت خزانہ ڈاکٹرعائشہ غوث پاشا،وفاقی سیکریٹریز،چیئرمین ایف بی آراورسینئرافسران شریک ہوئے۔

وزارت خزانہ کے مطابق وزارت توانائی کی طرف سے بجلی کے شعبہ کیلیے ٹیرف کو معقول بنانے سے متعلق سمری پیش کی گئی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ نیشنل الیکٹریسٹی پالیسی 2021ء کے مطابق حکومت کے الیکٹرک اور دیگر سرکاری ڈسٹری بیوشن کمپنیوں کے صارفین کیلیے یکساں ٹیرف برقرار رکھے گی۔ اسی کے تسلسل میں کے الیکٹرک کیلیے ٹیرف کو معقول بنانا ضروری ہے۔ اقتصادی رابطہ کمیٹی نے 3 ماہ کی ریکوری مدت کیلیے کے الیکٹرک کیلیے فی یونٹ 0.571روپے اضافے کی منظوری دیدی۔

مزید برآں نیپرا اکتوبر تا دسمبر 2021ء کی سہ ماہی کیلیے نظرثانی شدہ ٹیرف شیڈول جاری کرے گی۔ اجلاس میں پاور ڈویژن کی جانب سے حکومتی ملکیتی پاور پلانٹس کو ادائیگیوں سے متعلق سمری پیش کی گئی۔ اقتصادی رابطہ کمیٹی نے جاری مالی سال کیلیے اس ضمن میں 17 ارب روپے جاری کرنے کی منظوری دیدی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.