پاکستان

ماہانہ تنخواہ والوں پرٹیکس نہ لگانےکی تجویز واپس

نئی انکم ٹیکس تجاویزسامنےآگئیں جس میں 50 ہزارروپےماہانہ آمدنی والوں کوٹیکس سےاستثنیٰ دیا گیا

تنخواہ دارطبقےکےلیےنئی انکم ٹیکس تجاویزسامنےآگئیں جس میں 50 ہزارروپےماہانہ آمدنی والوں کوٹیکس سےاستثنیٰ دیا گیا ہےجب کہ ایک لاکھ روپےتک تنخواہ والوں پرٹیکس چھوٹ کی تجویزواپس لےلی گئی ہے۔ بجٹ دستاویزکےمطابق ایک لاکھ روپےماہانہ تنخواہ پرڈھائی فیصد ٹیکس عائد ہوگا جب کہ ایک لاکھ سےزائد اور 2 لاکھ روپےتنخواہ تک 15 ہزارروپےسالانہ فکس ٹیکس دینا ہوگا اس کےعلاوہ ایک لاکھ روپےسےزائد اور 2 لاکھ روپےتنخواہ تک 12.5 ماہانہ ٹیکس دینا ہوگا۔

دستاویزات کےمطابق 2 لاکھ سے 3  لاکھ روپےماہانہ تنخواہ پرایک لاکھ 65 ہزارروپےسالانہ جب کہ  20  فیصد ماہانہ ٹیکس ہوگا۔ دستاویزات میں مزید بتایا گیا ہےکہ 3 لاکھ سے 5 لاکھ روپےماہانہ تنخواہ پر 4 لاکھ 5 ہزارروپےسالانہ ٹیکس ہوگا جب کہ 3 لاکھ روپےسے اضافی رقم پر 25 فیصد ماہانہ ٹیکس ادا کرنا پڑے گا۔

اسی طرح 5 سے 10 لاکھ روپےتنخواہ پر 10 لاکھ روپےسالانہ ٹیکس ہوگا اور  5 لاکھ روپےسےاضافی رقم پر 32.5 فیصد ماہانہ ٹیکس لاگوہوگا۔ دستاویزات کےمطابق 10 لاکھ روپےسےزائد تنخواہ والوں پر 29  لاکھ روپےسالانہ ٹیکس لگےگا اور 10لاکھ روپےسےاضافی رقم پر 35 فیصد ٹیکس ہوگا۔ ذرائع کےمطابق فکسڈ ٹیکس 30 جون 2023 سےختم کردیاجائےگا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.