پاکستانفیچرڈ پوسٹ

صوبائی دارالحکومت میں سینکڑوں نامعلوم افراد کی لاشیں ملنے کے واقعات میں اضافہ، یہ لاشیں کہاں سے آتی ہیں؟ سنسنی مچا دینے والے حقائق سامنے آگئے

لاہور میں رواں برس 312 نامعلوم افراد کی لاشیں مل چکی ہیں اور اس تعداد میں ہرماہ اضافہ ہوتا جارہا ہے: ریسکیو ذرائع

صوبائی دارالحکومت میں سینکڑوں نامعلوم افراد کی لاشیں ملنے کے واقعات میں اضافہ، یہ لاشیں کہاں سے آتی ہیں؟ سنسنی مچا دینے والے حقائق سامنے آگئے ۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں رواں برس 312 نامعلوم افراد کی لاشیں مل چکی ہیں اور اس تعداد میں ہرماہ اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ ریسکیو حکام کے مطابق نامعلوم افراد کو دوسرے شہروں میں قتل کرکے لاشیں لاہور میں پھینک دی جاتی ہیں۔ ایدھی حکام نے بتایا کہ رواں سال صرف 6 ماہ میں 312 نامعلوم افراد کی لاشیں مل چکی ہیں۔ ایدھی فائونڈیشن کے مطابق رواں برس جنوری میں 33، فروری میں 41، مارچ میں 36 اور اپریل میں 42 نامعلوم افراد کی میتیں ملیں جنہیں ایدھی کی جانب سے دفنا دیا گیا ہے۔ایدھی حکام کے مطابق لاشیں ملنے کے واقعات آئے روز بڑھ رہے ہیں اور مئی میں یہ تعداد خطرناک حد تک بڑھ کر 62 تک جاپہنچی، جبکہ جون کے صرف 25 دنوں میں اب تک 52 نامعلوم میتوں کو دفنایا جاچکا ہے۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ لاشیں ملنے کے حوالے سے تحقیقات شروع کردی گئی ہیں اور اب تک کی معلومات کے مطابق شہر کے مضافاتی علاقوں سے شہریوں کو اغوا کرکے لاہور میں لاکر قتل کیا جاتا ہے اور لاشوں کو ضائع کرنے کی کوشش کی جاتی ہے۔دوسری جانب کوہاٹ کے نواحی علاقہ نصرت خیل میں دو نوجوانوں کی گولیوں سے چھلنی لاشیں برآمد کرلی گئیں۔ مقتولین کی لاشیں پوسٹ مارٹم کے لئے مقامی ہسپتال منتقل کردی گئیں۔

پولیس اور دیگرباخبر ذرائع کے مطابق منگل کے روز نواحی علاقہ نصرت خیل کی حدود میں دو نوجوانوں کی قتل شدہ لاشیں ملی ہیں جنہیں گولیاں مارکر قتل کردیا گیا۔مقتولین کی شناخت عبدالحمیدسکنہ نصرت خیل اور زبیر سکنہ کاغذئی کے ناموں سے ہوئی ہے۔مقامی پولیس جائے وقوعہ پہنچ گئی اور جائے وقوعہ سے اہم شواہد قبضہ میں لے کر دہرے قتل کی واردات کی مزید تفتیش شروع کردی ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.