پاکستانفیچرڈ پوسٹ

ملک کے سب سے بڑے شہر کراچی سے تعلق رکھنے والے ایسے میاں بیوی جنہوں نے ایک دوسرے کی زندگی بچانے کے لئے گردے بیچ دیئے ، قابل اشک داستان

اسما ایک سپر لیڈی ، میں ان سے پیار بھی کرتا ہوں اور مجھے ان پر بہت فخر بھی محسوس ہوتا ہے' ان کی خوش اخلاقی، ان کی مسکراہٹ ہر شخص کو بدل ڈالتی ہے

ملک کے سب سے بڑے شہر کراچی سے تعلق رکھنے والے ایسے میاں بیوی جنہوں نے ایک دوسرے کی زندگی بچانے کے لئے گردے بیچ دیئے ، قابل اشک داستان سامنے آگئی ۔

تفصیلات کے مطابق اسما ایک سپر لیڈی ہیں، میں ان سے پیار بھی کرتا ہوں اور مجھے ان پر بہت فخر بھی محسوس ہوتا ہے۔ ان کی خوش اخلاقی، ان کی مسکراہٹ ہر شخص کو بدل ڈالتی ہے۔ ڈائیلاسز سے آپریشن اور پھر اس کے بعد چھ ماہ جو میں نے آرام سے گزارے، وہ اسما کے مثبت رویہ کی وجہ سے ہی ممکن ہوا۔ اگر ایسا نہ ہوتا تو میں کب کا ہار چکا ہوتا۔ اپنی شریک حیات کے لیے پیار کے اظہار میں کہے گئے یہ جملے کسی فلم کا ڈائیلاگ نہیں بلکہ ایک شوہر کی اپنی بیوی سے سچی محبت کا اعتراف ہیں۔ 36 سال کے محمد عمر خان کی اپنی اہلیہ اسما سراج سے بے انتہا چاہت یکطرفہ نہیں بلکہ اسما حقیقتا کچھ ایسا ہی کر گزری ہیں جو ہمیں سوہنی ماہیوال یا شیریں فرہاد کی عشقیہ داستانوں میں ملتا ہے۔ اسما نے اپنے شریک حیات کی زندگی بچانے کے لیے ان کو اپنا ایک گردہ عطیہ کیا اور یہی نہیں بلکہ خود ڈونر بننے کا فیصلہ ان کا اپنا تھا اور اس کی تکمیل کے لیے انھوں نے دن رات دعائیں بھی کیں۔

اسما کہتی ہیں کہ جب ڈاکٹر نے بتایا کہ میرا گردہ عمر کے جسم نے قبول کر لیا تو سمجھیں ہر درد اور پریشانی میں بالکل بھول گئی۔ عمر ہمیشہ شکریہ ادا کرتے ہیں اور کہتے ہیں کہ تم نے زندگی کے اس موڑ پر میرا ساتھ دیا۔ اس سے پہلے کہ ہم آپ کو ایک دوسرے پر جان چھڑکنے والے اس جوڑے کی محبت کا مزید احوال سنائیں، پہلے آپ کو بتاتے ہیں کہ اسما تک ہم کیسے پہنچے۔۔ کچھ عرصہ قبل ہمیں سوشل میڈیا پر اسما سراج نامی ایک صارف کی پوسٹ سے علم ہوا کہ انھوں نے اپنے شوہر عمر کو نہ صرف اپنا ایک گردہ عطیہ کیا ہے بلکہ ہنسی خوشی اس مشکل آپریشن سے گزر کر اب وہ دوسروں کو بھی ڈونر بننے سے متعلق آگاہی فراہم کر رہی ہیں۔ ہم نے اسما اور عمر سے رابطہ کیا اور ان کی صحتیابی کے بعد ان سے ملنے کراچی کے علاقے گلشن اقبال میں واقع ان کے گھر پہنچے جہاں گردہ عطیہ کرنے کی مشکل سرجری سے گزرنے والی اسما اپنے دو بچوں کے ساتھ نہایت خوش دلی سے ہمارے استقبال کے لیے موجود تھیں۔

شوہر کو اپنا گردہ دینے کے فیصلے کے پس منظر سے آگاہ کرتے ہوئے اسما نے بتایا کہ ان کی شادی کو دس سال ہو گئے ہیں۔ شادی سے ایک سال پہلے ان کے شوہر عمر کو گردے میں مسئلے کا سامنا ہوا تاہم اس وقت ان کے گردے 80 فیصد کام کر رہے تھے اور ڈاکٹر نے دوائیاں اور احتیاط بتائی ہوئی تھیں لیکن اس سال جنوری میں عمر کو کورونا ہوا جس کے بعد ان کے گردے شدید متاثر ہو گئے۔ جب مختلف ٹیسٹ کروائے تو پتا چلا کہ عمر کے گردوں کو نقصان پہنچا ہے۔ میں نے سب سے پہلے رپورٹ دیکھی تو سوچا کہ ابھی عمر کو نہ بتاں کیونکہ وہ بہت زیادہ سٹریس لے لیں گے، میں چاہ رہی تھی کہ میں، ڈاکٹر اور عمر ساتھ بیٹھے ہوں تو اس وقت انھیں پتا چلے لیکن میں نے اپنے طور پر اس بارے میں ریسرچ کرنا شروع کر دی کہ کریئٹینائن لیول (گردوں سے فاسد مادے کے اخراج کا تناسب)زیادہ ہونے کی صورت میں کیا علاج تجویز کیا جاتا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.