پاکستانفیچرڈ پوسٹ

اصل حقیقت یہ ہے کہ سپریم کورٹ آف پاکستان نے تحریک انصاف اور مسلم لیگ ق کو ایک مرتبہ پھر؟ سینئر صحافی وکالم نگار حامد میر نے بڑی نشاندہی کر دی

سپریم کورٹ نے وزیراعلی کے انتخاب کی تاریخ 22 جولائی تک بڑھا کر تحریک انصاف اور ق لیگ کو لائف لائن دی ہے

اصل حقیقت یہ ہے کہ سپریم کورٹ آف پاکستان نے تحریک انصاف اور مسلم لیگ ق کو ایک مرتبہ پھر؟ سینئر صحافی وکالم نگار حامد میر نے بڑی نشاندہی کر دی۔

تفصیلات کے مطابق سینئر تجزیہ کار حامد میر نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ نے وزیراعلی کے انتخاب کی تاریخ 22 جولائی تک بڑھا کر تحریک انصاف اور ق لیگ کو لائف لائن دی ہے۔ سینئر صحافی و تجزیہ کار حامد میر نے کہا کہ وزیراعلی پنجاب کے انتخاب سے متعلق سپریم کورٹ کی کارروائی میں کئی ڈرامائی مراحل آئے، سپریم کورٹ تنازع نمٹانے کیلئے فریقین کیلئے قابل قبول راستہ تلاش کررہی تھی، عام طور پر عدالتوں میں کوئی فیصلہ ہوتا ہے تو وہ ایک فریق کے حق میں دوسرے کے خلاف ہوتا ہے، یہ اپنی نوعیت کا منفرد کیس تھا جس میں سپریم کورٹ کو لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے پر عملدرآمد کروانا تھا اس کیلئے درمیانی راستہ تلاش کیا گیا ہے، لاہور ہائیکورٹ کی طر ح سپریم کورٹ نے بھی حمزہ شہباز کے الیکشن کو کالعدم قرار نہیں دیا، سپریم کورٹ نے وزیراعلی کے انتخاب کی تاریخ 22جولائی تک بڑھا کر تحریک انصاف اور ق لیگ کو لائف لائن دی ہے،ایک طویل عرصے بعد عمران خان، پرویز الہی اور حمزہ شہباز ایک پیج پر نظر آرہے ہیں، آج کے بعد تینوں رہنما اس معاملہ پر اختلافی بات نہیں کرسکیں گے۔

حامد میر نے کہا کہ موجودہ صورتحال میں تحریک انصاف کا اتوار کو اسلام آباد کا جلسہ بہت اہم ہوگیا ہے، عمران خان ایک بڑا جلسہ کرنے میں کامیاب ہوجاتے ہیں تو اس کا پنجاب کے ضمنی انتخابات پر بھی اثر پڑسکتا ہے، جن حلقوں میں ضمنی انتخابات ہورہے ہیں عمران خان وہاں بھی جلسے کرسکتے ہیں، عمران خان جلسے کریں گے تو مریم نواز بھی میدان میں آجائیں گی، پی ٹی آئی کو ضمنی انتخابات میں شکست ہوئی تو عمران خان دھاندلی کا الزام عائد کریں گے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.