پاکستان

فیصل واوڈا کی تاحیات نا اہلی کیس کی سماعت ستمبر تک ملتوی

عدالت کے سامنے اہم سوال آرٹیکل 62 ون ایف کا ہے، دیکھنا ہے کیا الیکشن کمیشن آرٹیکل 62 ون ایف لگا سکتا ہے؟

سپریم کورٹ میں تحریک انصاف کے رہنما فیصل واوڈا کی تاحیات نا اہلی کیس کی سماعت ہوئی’ فیصل واوڈا کی تاحیات نا اہلی کیس کی سماعت ستمبر تک ملتوی کر دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دیے کہ عدالت کے سامنے اہم سوال آرٹیکل 62 ون ایف کا ہے، دیکھنا ہے کیا الیکشن کمیشن آرٹیکل 62 ون ایف لگا سکتا ہے؟ سپریم کورٹ میں فیصل واوڈا نا اہلی کیس سماعت پیپلز پارٹی کے رہنما نثار کھوڑو کے وکیل کی عدم دستیابی کے باعث ملتوی کر دی گئی۔ عدالت نے آرٹیکل 62 ون ایف کے اطلاق پر تمام فریقین کے وکلا کو تیاری کا حکم دے دیا۔ چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ آرٹیکل 62 ون ایف کا اطلاق بڑا سنجیدہ معاملہ ہے۔ عدالت نے فیصل واوڈا کے وکیل کی اپیل پر جلد سماعت کی استدعا مستردکرتے ہوئے کیس ستمبر تک ملتوی کردیا۔

واضح رہے کہ الیکشن کمیشن نے دوہری شہریت کیس میں سابق وفاقی وزیر فیصل واوڈا کو نااہل قرار دیا تھا اور ان کا بطور سینیٹر نوٹیفکیشن واپس لینے کا حکم دیا تھا جس کیبعد ان کا بطور سینیٹر الیکشن کمیشن سے جاری نوٹیفکیشن واپس لے لیا گیا تھا۔ الیکشن کمیشن نے اپنے فیصلے میں کہا تھا کہ فیصل واوڈا 2 ماہ میں تمام مالی مفادات اورمراعات واپس کریں، انہوں نے جرم چھپانے کے لیے قومی اسمبلی کی نشست سے استعفیٰ دیا۔ فیصل واوڈا سندھ سے تحریک انصاف کی نشست پر 3 مارچ 2021 کو سینیٹر منتخب ہوئے تھے۔ اس سے قبل وہ 2018 میں تحریک انصاف کے ٹکٹ پر رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے تھے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.