پاکستانفیچرڈ پوسٹ

جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ کا بڑا یوٹرن، عمران خان کی حمایت کرنے کا اشارہ کہاں سے ملا؟ حکومت سمیت اتحادیوں کی نیند حرام کر دینے والی خبر آگئی

اگر ہم چیئرمین تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کیخلاف ہوتے تو ضمنی انتخابات کے نتائج کیخلاف بھی اٹھ کھڑے ہوتے: فضل الرحمن

جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ کا بڑا یوٹرن، عمران خان کی حمایت کرنے کا اشارہ کہاں سے ملا؟ حکومت سمیت اتحادیوں کی نیند حرام کر دینے والی خبر آگئی ۔

تفصیلات کے مطابق مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ 2018 کے انتخابات میں جو دھاندلی ہوئی ہمیشہ اس کے خلاف آواز بلند کی ہے، عمران خان اپنی حدود میں رہو، جمعیت والے ابھی زندہ ہیں، ہم آپ کیلئے زمین اتنی گرم کردیں گے کہ یوتھیوں کے نرم تلوے اس پر نہیں رکھے جاسکیں گے۔ فضل الرحمان نے کہا کہ وہ آج نیوٹرل ہوگئے تو عمران خان انہیں جانور کہنے لگتا ہے، عمران خان نے خاکم بدہن ملک کو تین ٹکڑوں میں تقسیم کرنے کی بات کی۔ ان کا مزید کہنا تھ اکہ شہباز شریف غیر ضروری شرافت دکھا رہے ہیں، حکیم ثنا اللہ کو ملا حرکت میں لا ، مالم جبہ ، بی آر ٹی ، بلین ٹری اتنے بڑے بڑے کیسز ہیں اب اس کا حساب ہوگا۔ فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ کیوں مؤخر کیا جا رہا ہے؟ قانون بنانے کا حق پارلیمنٹ کو حاصل ہے، یہ عدالت کا کام نہیں ہے، ایوان میں رولنگ آئین شکنی تھی، صدر مملکت اور ڈپٹی اسپیکر دونوں نے آئین شکنی کی۔

سربراہ جے یو آئی نے مزید کہا کہ قیمتیں بڑھانے پر میں نے اختلاف کیا تھا لیکن اکثریت کا فیصلہ ہوا تو اس کے ساتھ کھڑے ہوئے، 4سال ملک میں بحران پیدا کیاگیا، ہم سے کہا جا رہا ہے 4 ماہ میں صحیح کردیں، ملک میں مشکلات ہیں اس میں کوئی دو رائے نہیں۔ فضل الرحمان نے کہا کہ عمران خان عدالت کے پیچھے چھپنے کی کوشش کر رہا ہے، ملک میں امتیازی معاملات کو صحیح کرنے کی ضرورت ہے، عمران اقتدار میں آنے کی خواہش رکھتے ہو تو یہ خواہش پوری نہیں ہوگی، عمران خان نے جو گند کیا ہے، ہم اب اس سے نکلنا چاہتے ہیں۔ سربراہ پی ڈی ایم نے کہا کہ میں نے کہا تھا آئی ایم ایف سے بات نہ کرو لیکن میری رائے سے اختلاف کیا گیا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.