پاکستان

موہٹہ پیلس کو کالج بنانے کی وصیت کا معاملہ، عدالت نے فیصلہ محفوظ کر لیا

محترمہ کی زیر استعمال اشیا اور قیمتی سامان کو برباد کردیا گیا، پیپلز پارٹی حکومت نے غیرقانونی ٹرسٹ بناکر موہٹہ پیلس کے حوالے کردیا

سندھ ہائیکورٹ نے موہٹہ پیلس کو کالج بنانے کی وصیت کے معاملہ پر فیصلہ محفوظ کرلیا، وکیل نے مؤقف اپنایا کہ سپریم کورٹ کا فیصلہ ہے، رہائشی پلاٹ پر کمرشل سرگرمیاں نہیں ہوسکتیں۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائیکورٹ نے موہٹہ پیلس میں میڈیکل گرلز کالج کے قیام سے متعلق درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔ سندھ ہائیکورٹ میں موہٹہ پیلس گیلری ٹرسٹ اور علاقہ مکینوں کی فریق بننے کی درخواستوں پر سماعت ہوئی جس دوران عدالت نے استفسار کیا کہ محترمہ فاطمہ جناح نے موہٹہ پیلس کو کالج بنانے کی وصیت کی تھی۔ اس پر علاقہ مکینوں کے وکیل خواجہ شمس الاسلام نے عدالت میں مؤقف اپنایاکہ سپریم کورٹ کا فیصلہ ہے، رہائشی پلاٹ پر کمرشل سرگرمیاں نہیں ہوسکتیں۔

جسٹس ذوالفقار علی نے پوچھا کہ کیا محترمہ کی وصیت پر عمل نہیں ہونا چاہیے؟کیا محترمہ فاطمہ جناح سے غلطی ہوگئی کہ انہوں نے یہ سوچا؟کل آپ کہیں گے انہوں پاکستان بناکر بھی غلطی کردی۔ درخواست گزار نے کہا کہ محترمہ کی زیر استعمال اشیا اور قیمتی سامان کو برباد کردیا گیا، پیپلز پارٹی حکومت نے غیرقانونی ٹرسٹ بناکر موہٹہ پیلس کے حوالے کردیا،کمرشل سرگرمیوں پر علاقہ مکینوں نے کوئی اعتراض نہیں کیا، میڈیکل کالج بنانے پر علاقہ مکینوں کے اعتراض کا جواز نہیں۔ عدالت نے فریقین کے وکلا کے دلائل سننے کے بعد درخواستوں پر فیصلہ محفوظ کرلیا جو 30 اگست کو سنایاجائے گا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.