پاکستانفیچرڈ پوسٹ

4 ماہ میں مہنگائی نے عوام کی کمر توڑ دی، شہباز شریف حکومت کے دوران مہنگائی کی شرح میں کتنا اضافہ ہوا؟ معاشی ماہرین نے سنسنی مچا دینے والی رپورٹ جاری کر دی

موجودہ حکومت کے قیام کے وقت ملک میں ہفتہ وار مہنگائی کی شرح 17 فیصد تھی، جو اب ساڑھے 44 فیصد سے اوپر جا چکی ہے

4 ماہ میں مہنگائی نے عوام کی کمر توڑ دی، شہباز شریف حکومت کے دوران مہنگائی کی شرح میں کتنا اضافہ ہوا؟ معاشی ماہرین نے سنسنی مچا دینے والی رپورٹ جاری کر دی ۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن، پیپلز پارٹی سمیت 13 جماعتوں کی اتحادی وفاقی حکومت کے دور میں ہر ہفتے مہنگائی کے ریکارڈ ٹوٹنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اعداد و شمار کے مطابق موجودہ حکومت کے قیام کے وقت ملک میں ہفتہ وار مہنگائی کی شرح 17 فیصد تھی، جو اب ساڑھے 44 فیصد سے اوپر جا چکی، یوں صرف 4 ماہ میں ہفتہ وار مہنگائی کی شرح میں ہوشربا 160 فیصد سے زائد اضافہ ہو چکا۔ معاشی ماہرین اور اعداد و شمار کے مطابق ملک میں مہنگائی کی موجودہ شرح ملک کی 75 سالہ تاریخ کی بلند ترین شرح ہے۔ اس حوالے سے سابق وزیر اعظم عمران خان نے بھی حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

ہفتہ وار مہنگائی کی رپورٹ جاری کردی، رپورٹ میں کہا گیا کہ مہنگائی کی شرح میں مسلسل دوسرے ہفتے 1.83 فیصد اضافہ ہوا ہے، جس کے باعث مہنگائی کی شرح بڑھ کر 44.58 فیصد ہوگئی ہے۔ حالیہ ہفتے کے دوران 23 اشیا ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ہوا، رواں ہفتے ٹماٹر کی فی کلو قیمت میں 47 روپے 42 پیسے اضافہ ہوا۔ فی کلو ٹماٹر 110 روپے کی اوسط قیمت سے 157 روپے فی کلو ہوگئے ہیں۔ پیاز کی فی کلو قیمت میں 35 روپے 6 پیسے کا اضافہ ہوا، ایک ہفتے کے دوران آلو کی فی کلو قیمت 3 روپے 88 پیسے بڑھ گئی ہے، رواں ہفتے انڈوں کی قیمت میں فی درجن 7 روپے 25 پیسے کا اضافہ ہوا۔ ایک ہفتے میں ایل پی جی کا گھریلو سلنڈر51 روپے 2 پیسے، بچوں کا خشک دودھ 390 ملی گرام کا پیکٹ 8 روپے 57 پیسے مہنگا کردیا گیا ہے۔ اسی طرح برائلر مرغی کی فی کلو قیمت میں 2 روپے 48 پیسے، گندم کا 20 کلو آٹے کا تھیلا 7 روپے مہنگا ہوا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.