پاکستانفیچرڈ پوسٹ

پاکستان میں خوراک کا بڑھتا ہوا بحران’ آنے والے دنوں میں خوراک کی بدترین قلت پیدا ہونے کا خدشے سے ملک میں انارکی پھیلنے کا خطرہ منڈلانے لگا

کھانے پینے کی اشیاعام شہریوں کی پہنچ سے پہلے ہی دور ہوچکی ہے رہی سہی کسر حکومت تیل و بجلی اور گیس کے بلوں سے پوری کررہی ہے

پاکستان میں خوراک کا بڑھتا ہوا بحران’ آنے والے دنوں میں خوراک کی بدترین قلت پیدا ہونے کا خدشے سے ملک میں انارکی پھیلنے کا خطرہ منڈلانے لگا۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی ادارہ شماریات کے اعداد و شمار میں بتایا گیا ہے کہ گذشتہ ہفتے کے مقابلے میں آٹے کی قیمت میں 15 ستمبر کو ختم ہونے والے ہفتے میں تقریبا 13 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ ادارہ شماریات کے مطابق آٹھ ستمبر کو دس کلو آٹے کے تھیلے کی قیمت 774 روپے تھی جبکہ اس کے مقابلے میں 15 ستمبر کو یہی دس کلو تھیلے کی قیمت 880 روپے ہے جو تقریبا 13 فیصد اضافہ ہے۔

ماہرین اور تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ بلیک مارکیٹ اور اس کو حاصل طاقتور حلقوں کی سرپرستی سے ملک میں خوراک کا ایسا بحران پیدا ہونے جارہا ہے جس سے ملک میں انارکی پھیلے گی کیونکہ کھانے پینے کی اشیاعام شہریوں کی پہنچ سے پہلے ہی دور ہوچکی ہے رہی سہی کسر حکومت تیل و بجلی اور گیس کے بلوں سے پوری کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک عام گھرانہ اپنی مجموعی آمدنی کا50فیصد تک صرف بجلی کے بلوں میں اداکررہا ہے تو دوسری جانب موبائل فون پر پیغامات کے ذریعے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی جانب سے شہریوں کو ہراساں کیا جارہا ہے موجودہ صورتحال میں 50ہزار ماہانہ آمدنی والا غریب ہے کیونکہ اپنی آدھی تنخواہ وہ یوٹیلٹی بلوں میں دے دیتا ہے باقی آدھی سے وہ بچوں کی تعلیم خوراک اور دیگر گھریلو اخراجات پورے کرتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ کوئی ڈھکی چھپی بات نہیں کہ حکومت نے جن شرائط پر آئی ایم ایف سے قسط وصول کی ہے وہ ناقابل عمل ہیں مگرحکمران اتحاد تمام تر بوجھ عوام پر ڈال رہا ہے حکومت کی جانب سے دوست ممالک سے ملنے والی امدادی رقوم کے دعوے بھی محض دعوے کی ثابت ہوئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.