پاکستان

محکمہ اینٹی کرپشن پنجاب نے احتساب بیورو (نیب) کو زبردست جھٹکا دیدیا

نیب میں جاری پچاس کروڑ سے نیچے والے تمام سیاسی افراد کے ریفرنسز اور محکموں کے کیسز کی تحقیقات اب اینٹی کرپشن پنجاب کرے گا

محکمہ اینٹی کرپشن پنجاب نے احتساب بیورو (نیب) کو زبردست جھٹکا دیتے ہوئے 50 کروڑ سے کم کرپشن کے نیب کیسز کی تحقیقات کا فیصلہ کرلیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق نیب قانون میں ترامیم کے بعد اینٹی کرپشن پنجاب نے بڑا فیصلہ کرلیا۔ نیب میں جاری پچاس کروڑ سے نیچے والے تمام سیاسی افراد کے ریفرنسز اور محکموں کے کیسز کی تحقیقات اب اینٹی کرپشن پنجاب کرے گا۔ ذرائع وزیراعلیٰ آفس کے مطابق اینٹی کرپشن پنجاب کی جانب سے قومی احتساب بیورو (نیب لاہور)کو خط لکھا جائے گا اور 50 کروڑ سے نیچے والے تمام کیسز کی تفصیلات مانگی جائیں گی۔چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان اور وزیراعلیٰ پرویز الٰہی کی منظوری کے بعد اینٹی کرپشن پنجاب کی جانب سے خط لکھا جارہا ہے۔

خیال رہے کہ قومی احتساب بیورو (نیب)نے نیب ترمیمی ایکٹ 2022 پر من و عن عمل کرنے کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے 50 کروڑ روپے سے زائد کی کرپشن یا کم از کم 100 متاثرین کے ساتھ بڑے پیمانے پر دھوکہ دہی کے مقدمات پر کارروائی کا فیصلہ کیا ہے۔ بدھ کو نیب سے جاری اعلامیہ کے مطابق چیئرمین نیب آفتاب سلطان کی زیر صدارت نیب ہیڈکوارٹرز میں اجلاس ہوا جس میں ڈپٹی چیئرمین نیب سید ظاہر شاہ، پراسکیوٹر جنرل ، ڈائریکٹر جنرلز اور سینئر لا افسران نے شرکت کی۔ اجلاس میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ نئے قانون پر من و عن عمل کیا جائے گا، اس قانون کے مطابق 50 کروڑ روپے سے زائد کی کرپشن یا کم از کم 100 متاثرین کے ساتھ بڑے پیمانے پر دھوکہ دہی کے مقدمات پر کارروائی کی جائے گی۔

احتساب عدالت سے نیب کو واپس بھیجے گئے مقدمات دائرہ اختیار کے مطابق سیشن کورٹس ، اینٹی کرپشن کورٹس اور دیگر عدالتوں کو بھیجے جائیں گے تاہم پرائیویٹ افراد کی جانب سے شکایات پر مبنی ریفرنسز شکایت کنندہ کو دائرہ اختیار اور قانون کے مطابق کارروائی کیلئے واپس کئے جائیں گے۔ اجلاس میں اس بات کا پھر اعادہ کیا گیا کہ نیب ترمیمی ایکٹ 2022 پر نیب کے دائرہ اختیار کے مطابق من و عن عمل کیا جائے گا۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.