پاکستان

پمز اسپتال میں کرپشن کے انکشاف پر وفاقی حکومت نے اٹھایا بڑا قدم

پمز اسپتال سے میڈیکل ٹیچنگ انسٹی ٹیوٹ (ایم ٹی آئی)ایکٹ کے خاتمے کے بعد آڈٹ کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

پمز اسپتال میں کرپشن کے انکشاف پر وفاقی حکومت نے اٹھایا بڑا قدم’حکومت نے پمز اسپتال سے میڈیکل ٹیچنگ انسٹی ٹیوٹ (ایم ٹی آئی)ایکٹ کے خاتمے کے بعد آڈٹ کا فیصلہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پمز ذرائع کا کہنا ہے کہ ایم ٹی آئی کے تحت پمز اسپتال کو 14 ارب روپے کے فنڈز دیئے گئے تھے، ایم ٹی آئی انتظامیہ نے دفاتر کی تزئین و آرائش اور بھاری تنخواہوں میں سرکاری فنڈز خرچ کر دیے۔ ذرائع کے مطابق ڈین ایم ٹی آئی نے اپنی تنخواہ ساڑھے 7 لاکھ روپے مختص کی تھی، میڈیکل ڈائریکٹر، اسپتال ڈائریکٹر، نرسنگ ڈائریکٹر اور ڈائریکٹر فنانس کی تنخواہ ساڑھے 5 لاکھ روپے مختص کی گئی۔

اس کے علاوہ ڈائریکٹر ایچ آر، ڈائریکٹر آئی ٹی اور منیجر لیگل کے لیے ساڑھے 3 لاکھ روپے تنخواہ مختص کی گئی، تنخواہوں کی مد میں ایم ٹی آئی حکام نے14 سینئر عہدوں کے لیے 11 کروڑ 48 لاکھ روپے مختص کیے، ایم ٹی آئی حکام نے دفاترکے لیے مہنگا فرنیچر، ایل ای ڈی، اے سی وغیرہ خریدنے پر بھی اسپتال فنڈ خرچ کیے۔ خیال رہے کہ پمز اسپتال پر ایم ٹی آئی ایکٹ گزشتہ سال نافذ کیا گیا تھا تاہم بعد ازاں اسے سینیٹ کی جانب سے ختم کردیا گیا۔ وزارت قومی صحت کی جانب سے ایم ٹی آئی کے تحت فنڈز کے آڈٹ کے لیے ٹیم تشکیل دینے کا حکم جاری کردیا گیا ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.