پاکستانفیچرڈ پوسٹ

وفاقی حکومت اور نیپرا نے صارفین کو زور دار جھٹکا دینے کے لئے تیاری مکمل کرلی، بجلی کی قیمتوں میں بڑے ریلیف سے محروم کرنے کا پلان بھی بنا لیا گیا

صارفین بجلی کی وہی قیمت ادا کریں گے جو ستمبر میں تھی، اکتوبر سے 4 ماہ کے دوران صارفین پر 94 ارب روپے کا بوجھ ڈالا جائے گا

وفاقی حکومت اور نیپرا نے صارفین کو زور دار جھٹکا دینے کے لئے تیاری مکمل کرلی، بجلی کی قیمتوں میں بڑے ریلیف سے محروم کرنے کا پلان بھی بنا لیا گیا ۔

تفصیلات کے مطابق ستمبر میں ختم ہونے والی ایڈجسٹمنٹس کے ریلیف کا راستہ روکنے کا منصوبہ تیار کیا گیا ہے۔ نیپرا اور وفاقی وزیر نے ستمبر کے بعد سہ ماہی ایڈجسٹمنٹ کا ریلیف نہ دینے کا اعتراف کرلیا۔ ذرائع کے مطابق ستمبر میں 3 روپے 21 پیسے فی یونٹ وصولی کی سابقہ ایڈجسٹمنٹس ختم ہو چکی ہے۔ نیپرا نے گزشتہ روز بجلی 3 روپے 21 پیسے فی یونٹ مہنگی کرنے کی منظوری دی۔ اکتوبر سے پرانی ایڈجسٹمنٹ جتنی نئی ایڈجسٹمنٹ لاگو کرنے کی منظوری بھی دی گئی۔ نئی ایڈجسٹمنٹ لاگو نہ کرنے سے بجلی 3 روپے 21 پیسے فی یونٹ سستی ہو سکتی تھی۔

وزیر بجلی نے اعتراف کیا کہ صارفین بجلی کی وہی قیمت ادا کریں گے جو ستمبر میں تھی۔ ادھر نیپرا نے بھی نئی ایڈجسٹمنٹ پہلے والی ایڈجسٹمنٹس کے متبادل چارج کرنے کا اعتراف کرلیا۔ نیپرا نے اکتوبر سے 4 ماہ تک صارفین پر 94 ارب کا اضافی بوجھ ڈالنے کی منظوری دی۔ جبکہ دوسری جانب سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی نے نیپرا کو بجلی مہنگی کرنے کیلئے ایک اور درخواست جمع کروا دی۔نیپرا کے مطابق سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی نے ستمبرکی فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کے لیے نیپرا میں درخواست جمع کرائی ہے نیپرا کے مطابق درخواست میں بجلی 20 پیسے فی یونٹ مہنگی کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے جس پر 26 اکتوبر کو سماعت کی جائے گی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.