پاکستانفیچرڈ پوسٹ

لانگ مارچ کا پانچواں روز، وزیر داخلہ راناثناء اللہ کی سابق وزیراعظم عمران خان کو مذاکرات کی مشروط پیشکش، کیا شرائط رکھیں؟ اندر کی بات سامنے آگئی

عمران خان مذموم فسادی ایجنڈے کو چھوڑ کر قانون و آئین کے تابع آکر سیاسی قوتوں کے ساتھ بیٹھیں اور اپنی بدتمیزی، بدتہذیبی پر معذرت کریں

لانگ مارچ کا پانچواں روز، وزیر داخلہ راناثناء اللہ کی سابق وزیراعظم عمران خان کو مذاکرات کی مشروط پیشکش، کیا شرائط رکھیں؟ اندر کی بات سامنے آگئی۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کے رہنماء و وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ کا کہنا تھا کہ فتنہ فساد مارچ سے عوام نے مکمل لاتعلقی کا اعلان کیا ہے، پاکستان کو افراتفری اور انارکی کی نہیں اتفاق کی ضرورت ہے، مریدکے میں اسد عمر چیخ و پکار کر رہے تھے اور مجموعی طورپر چارپانچ سو افراد تھے،عمران خان نیازی کہتے ہیں عوام کا سمندر میرے ساتھ چل رہاہے۔ رانا ثنا اللہ کا کہنا تھا کہ الیکشن میں تم جیتنے کی بات کرتے ہو، تمہیں جنرل الیکشن میں پتا چلے گا، احساس پروگرام کی جب انکوائری ہوگی تو تم سب نے پکڑے جانا ہے، غریبوں کے نام پر تم نے چندا اکٹھا کرکے سیاست کی ہے، غریب لوگوں کے پیسے پر تم الیکشن لڑ رہے ہو، تم سیاست کر رہے ہو اور باقی تمام جماعتیں ملک کو ڈیفالٹ سے بچا رہی ہیں۔

وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ شیڈول سے پتا چل رہا ہے کہ 6 تاریخ تک یہ گوجرانوالا میں ہی ہے،کم تعداد سے ثابت ہوا پنجاب کے دونوں ڈویژنز نے لاتعلقی کا اظہار کیا ہے، اسے چاہیے اپنے مذموم فسادی ایجنڈے کو چھوڑ کر آئین و قانون کے تابع آئے، تمام سیاسی جماعتوں کے ساتھ بیٹھے، اپنی بدتمیزی بدتہذیبی کی معافی مانگے۔ ان کا کہنا تھا کہ جو جتھا یا لانگ مارچ اسلام آباد پر حملہ آور ہونے کے لیے آئیگا اسے روکا جانا چاہیے، 25 مئی کو وزیراعظم نے پولیس کو آنسو گیس اور ربڑ کی گولیاں دینے کا کہا تھا، فیصل واوڈا کی پریس کانفرنس عمران خان کی ملی بھگت ہے، فیصل واوڈا نے کہا کہ لانگ مارچ میں خون ہی خون ہوگا، علی امین گنڈا پور نے اپنی آڈیو لیک کی خود تائید کی۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.