پاکستان

سانحہ وزیر آباد ‘صحافیوں کو شامل کرنے کی کوشش، آر آئی یو جے کی عمران خان پر چڑھائی

عمران خان نے صحافیوں کا نام لیکر ان کی زندگی خطرے میں ڈالنے کیساتھ ساتھ ہماری پیشہ وارانہ صحافتی ذمہ داریوں پر بھی اثر انداز ہونیکی کوشش کی

سانحہ وزیر آباد میں صحافیوں کو شامل کرنے کی کوشش پر راولپنڈی اسلام آباد یونین آف جرنلسٹس (آر آئی یو جے ) نے سابق وزیراعظم عمران خان پر چڑھائی کر دی ۔

تفصیلات کے مطابق راولپنڈی اسلام آباد یونین آف جرنلسٹس (آر آئی یو جے)نے ایک خبر کی بنیاد پر تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی جانب سے سینئر صحافیوں حامد میر، مرتضی سولنگی اور وقار ستی کو سانحہ وزیر آباد میں ملوث کرنے کی کوشش پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ آر آئی یو جے کے صدر عابد عباسی و جنرل سیکرٹری طارق ورک نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ عمران خان نے ان تینوں صحافیوں کا نام لیکر ان کی زندگی خطرے میں ڈالنے کے ساتھ ساتھ صحافیوں کی پیشہ وارانہ صحافتی ذمہ داریوں پر بھی اثر انداز ہونے کی کوشش کی ہے ، صحافتی تنظیمیں کسی ادارے، سیاسی جماعت یا رہنما کو اس طرح آزادی صحافت دبانے کی اجازت نہیں دیں گی۔

انہوں نے کہا کہ صحافیوں کی نمائندہ تنظیم پی ایف یو جے نے واشگاف الفاظ میں عمران خان پر حملے کی مذمت اور مقدمہ درج کرکے ملزمان کی گرفتاری کا مطالبہ کیا تھا جبکہ پیمرا کی جانب سے عمران خان کی تقریر نشر کرنے پر پابندی کو مسترد کرتے ہوئے اسے آزادی اظہار پر حملہ قرار دیا تھا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ عمران خان کو بھی صحافیوں پر بیجا الزام تراشی نہیں کرنے چاہیے جو آزادی اظہار پر حملے کے مترادف ہو ۔ بیان کے مطابق کسی بھی بڑے واقعے کے بعد تمام رپورٹرز اپنے اپنے ذرائع سے فالو اپ خبر کے حصول کی کوشش کرتے ہیں اور جس رپورٹر کو اپنے ذرائع سے خبر مل جائے وہ اپنی خبر فائل کر دیتا ہے۔

آر آئی یو جے کے عہدیداروں نے مزید کہا کہ اگر وزیر آباد میں عمران خان پر حملے کا ملزم موقع پر گرفتار ہوا، تحریک انصاف کے کارکنوں نے اسے پولیس کے حوالے کیا، وہاں سے ملزم کا بیان جن رپورٹرز اور چینلز کو ملا انہوں نے پیشہ وارانہ ذمہ داری کے مطابق وہ بیان من و عن نشر کر دیا جس پر عمران خان کا اعتراض بلا جواز ہے۔ ان کا کہنا تھاکہ گرفتار ملزم کے بجائے عوام کودھوکا دینے کیلئے کسی اور شخص کا بیان چلایا جاتا یا گرفتار ملزم کی گفتگو توڑ مروڑ کر پیش کی جاتی تو پھر ان صحافیوں پر تنقید کرنے میں عمران خان حق بجانب ہوتے، اگر یہ سلسلہ جاری رہا تو آر آئی یو جے اپنے ارکان کے تحفظ کیلئے عدالتی چارہ جوئی کا حق محفوظ رکھتی ہے۔

متعلقہ خبریں

Back to top button

Adblock Detected

We Noticed You are using Ad blocker :( Please Support us By Disabling Ad blocker for this Domain. We don't show any popups or poor Ads.