شوبز

جب کبریٰ خان کا گلا مداح خاتون نے ہاتھوں سے دبا دیا

فلم کی پروموشن کے دوران ایک خاتون مداح نے سیلفی کے لیے ان کا گلا دبوچ لیا تھا اور کافی دیر تک خاتون کا ہاتھ ان کے گلے میں رہا

لاہور(شوبزڈیسک)اداکارہ کبریٰ خان جو فلموں اور ڈراموں میں یکساں مقبول ہیں‘ انہوں نے انکشاف کیا ہے کہ ماضی میں فلم کی پروموشن کے دوران ایک خاتون مداح نے سیلفی کے لیے ان کا گلا دبوچ لیا تھا اور کافی دیر تک خاتون کا ہاتھ ان کے گلے میں رہا۔کبریٰ خان کی سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی مختصر ویڈیو میں اداکارہ نے بتایا کہ 2018 میں جب وہ ساتھی اداکاروں کے ساتھ فلم ”جوانی پھر نہیں آنی ٹو“کی تشہیر میں مصروف تھیں کہ ایک شاپنگ مال کے دوران ان کے ساتھ یہ نامناسب واقعہ پیش آیا۔

اداکارہ کا کہنا تھا کہ عوامی تقریبات میں شوبز شخصیات کے ساتھ بدتمیزی کے واقعات پیش آنا معمول کی بات ہے اور لڑکے ہوں یا لڑکیاں وہ بدتمیزی کرتی ہیں۔انہوں نے بتایا کہ عام طور پر اداکارائیں گاڑی میں بیٹھتی ہیں تو لڑکیاں ان کی کار کو گھیرے میں لے لیتی ہیں اور اداکاراؤں کو تنگ اور پریشان کرتی ہیں اور یہ لڑکے بھی ایسا کرتے ہیں۔کبریٰ خان کے مطابق عوامی تقریبات کے دوران ساتھی اداکاروں اور سکیورٹی عملے کے ہوتے ہوئے بھی انہیں تنگ کیا جاتا ہے اور بعض نامناسب واقعات بھی پیش آجاتے ہیں۔

انہوں نے ماضی کا قصہ یاد کرتے ہوئے بتایا کہ وہ فہد مصطفیٰ، ہمایوں سعید، واسع چوہدری اور احمد علی بٹ سمیت دیگر ساتھی اداکاروں کیساتھ اپنی فلم ”جوانی پھر نہیں آنی ٹو“کی پروموشن میں مصروف تھیں کہ ایک خاتون مداح نے ان کا گلا دبوچ لیا تھا۔کبریٰ خان نے بتایا کہ خاتون مداح ان کے ساتھ سیلفی کھچوانے کی خواہش مند تھیں اور صرف اسی لیے وہ ان تک پہنچنا چاہتی تھیں۔ان کا کہنا تھا کہ خاتون نے سکیورٹی عملے اور اداکاروں کے حصار کے باوجود ان کے گلے کو دبوچ لیا اور خاتون کا ہاتھ ان کے گلے میں کافی دیر تک رہا اور انہیں سانس لینے میں مشکل بھی پیش آئی۔

انہوں نے بتایا کہ بعد ازاں سکیورٹی عملے نے خاتون کو دھکیلنا شروع کیا لیکن انہوں نے عملے کو صرف خاتون کا ہاتھ گلے سے نکالنے کا کہا، کیوں کہ خاتون کی کوئی غلط نیت نہیں تھی، وہ صرف ان کے ساتھ سیلفی کھچوانا چاہتی تھیں۔کبریٰ خان نے اعتراف کیا کہ عوامی تقریبات کے دوران شوبز شخصیات کے ساتھ اس طرح کے نامناسب واقعات پیش آتے ہیں جب کہ لڑکیاں اور لڑکے بدتمیزی بھی کرتے ہیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button