سوشل ایشوز

آٹے پر ٹیکس، روٹی اور نان کی قیمتوں میں اضافہ کا خدشہ ظاہر کر دیا گیا

ودہولڈنگ ٹیکس عائد ہونے سے فائن آٹے کی بوری 7500 سے بڑھ کر 9ہزار ، لال آٹے کی 79 کلو کی بوری 7 ہزار روپے سے بڑھ کر 8500 روپے ہوگئی ہے

لاہور(کھوج نیوز) آٹے پر ٹیکس، روٹی اور نان کی قیمتوں میں اضافہ کا خدشہ ظاہر کر دیا گیا ہے جس کے بعد روٹی اور نان کی قیمتیں ایک بار پھر آسمان کو چھونے لگ جائیں گی۔

تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں گندم کی قیمتوں میں کمی کے باعث نان اور روٹی کی قیمتوں میں10 روپے تک کی کمی کی گئی تھی جس کے بعد پنجاب میں روٹی 16 روپے اور نان 20 روپے کا اور اسلام آباد میں روٹی 18 اور نان 22 روپے کا ہو گیا تھا تاہم بجٹ میں ودہولڈنگ ٹیکس عائد ہونے سے آٹے کی قیمت میں اضافہ ہوگیا۔اسلام آباد نان بائی ایسوسی ایشن کے صدر نے اعلان کیا ہے کہ ودہولڈنگ ٹیکس عائد ہونے کے باعث فائن آٹے کی بوری 7500 روپے سے بڑھ کر 9 ہزار روپے، لال آٹے کی 79 کلو کی بوری 7 ہزار روپے سے بڑھ کر 8500 روپے ہوگئی ہے جبکہ ایل پی جی کی قیمت بھی 50 روپے فی کلو بڑھ گئی ہے جس کی وجہ سے 10 جولائی سے اسلام آباد میں روٹی 25 اور نان 30 روپے میں فروخت کیا جائے گا۔

دوسری جانب پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن کے صدر چاروں صوبائی چیئرمین سابقہ عہداران اور پورے ملک سے 600 سے زائد فلور ملز مالکان نے اعلان کیا ہے کہ جمعرات 11 جولائی سے گندم کی پسائی نہیں کریں گے اور یہ سلسلہ اس وقت تک بند رہے گا جب تک ہمارے مطالبات منظور نہیں ہوتے اور ود ہولڈنگ ٹیکس واپس نہیں ہوتا۔ اس کے علاوہ مینوفیکچررز پر 2.5 فیصد ودہولڈنگ ٹیکس عائد ہونے سے 20 کلو آٹے کے تھیلے کی قیمت 50 روپے بڑھ گئی ہے، ڈبل روٹی کی قیمت میں 10 روپے جبکہ بن، شیرمال اور دیگر بیکری آئٹمز کی قیمتوں میں 5 روپے کا اضافہ ہوا ہے۔ امپورٹڈ اشیا پر نئے ٹیکس عائد ہونے کے بعد چاول اور دالوں کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ چاول کا 25 کلو کا بیگ 800 سے ہزار روپے بڑھ گیا ہے جبکہ دالوں کی قیمتوں میں 20 سے 30 روپے فی کلو اضافہ ہو گیا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button