سوشل ایشوز

سندھ پولیس نے اپنے پیٹی بھائی کو بھی نا بخشا، تلاش کرنے کی بجائے تنخواہ بند کردی

11 جولائی کو بیٹا سینٹرل جیل ڈیوٹی پر گیا تھا، واپس نہیں آیا ، اس کے چار بچے ہیں ، گھر بھی کرائے کا ہے: والدہ

سندھ پولیس نے اپنے پیٹی بھائی کو بھی نہ بخشا اور 2 ماہ سے لاپتا ہونے والے کانسٹیبل کو تلاش کرنے کے بجائے اس کی تنخواہ ہی بند کر دی ، گھر میں فاقوں کی نوبت آگئی

سندھ ہائی کورٹ میں سماعت کے دوران اس بات کا انکشاف ہوا جس پر جسٹس نظر اکبر نے ریمارکس دیے کہ پولیس والو اپنے بھائیوں پر تو رحم کرو۔ عدالت نے استفسار کیا کہ بتایا جائے لاپتا اہلکار کی تنخواہ کس کے حکم پر اور کیوں بند کی گئی، پولیس اہلکار 2 ماہ سے لاپتا ہے بازیابی کے لیے کیا اقدامات کیے گئے؟ لاپتا اہلکار محمد ضیا کی والدہ نے عدالت کو بتایا کہ 11 جولائی کو بیٹا سینٹرل جیل ڈیوٹی پر گیا تھا، واپس نہیں آیا ، اس کے چار بچے ہیں ، گھر بھی کرائے کا ہے۔

Back to top button